بیرون ملک سے آنے والے عازمین کے لیے "جامع انشورنس"سروس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اس سال حج کے سیزن کے دوران سعودی عرب میں وزارت حج و عمرہ نے سعودی عرب سے باہر سے آنے والے عازمین کے لیے جامع انشورنس پروگرام کا آغاز کیا ہے جس کا مقصد انہیں امن اور آسانی کے ساتھ اپنی مناسک ادا کرنے کے قابل بنانا ہے۔ مملکت کے ویژن 2030 کے اہداف کے حصول کی کوشش کرنا ہے تاکہ حجاج کرام اور عمرہ زائرین کے تجربے کو بہتر بنایا جا سکے۔ یہ سہولت حجاج کرام کو 75 دن تک دستیاب ہوسکتی ہے۔

یہ پروگرام وزارت حج و عمرہ اور سعودی سنٹرل بینک "ساما" کے زیر نگرانی شروع کیا گیا ہے۔اس کا مقصد مملکت میں موجودگی کے دوران حجاج کرام کے تجربے کو بہتر بنانا ، اس کے نتیجے میں پڑنے والے کسی بھی مالی بوجھ کوکم کرنا، انشورنس پالیسی کی کوریج کے فوائد اور حدود کے اندر ان کے سامنے آنے والے کسی بھی خطرے سے آگاہ کرنا ہے۔

یہ پروگرام ان واقعات کا احاطہ کرتا ہے جو حادثے کے نتیجے میں موت یا مستقل طور پر معذوری کا باعث بنتے ہیں۔ اس میں مرنے والوں کی لاشوں کو اگر ان کے رشتہ دار چاہیں تو ان کے ممالک میں واپس لے جانا بھی شامل ہے۔ پروگرام میں پروازوں کی منسوخی یا تاخیر کے معاملات کے معاوضے کا بھی احاطہ کیا گیا ہے۔ سعودی عرب سے روانگی، کوویڈ 19 انفیکشن کے کیسز کو کور کرنے کے علاوہ جہاں سے ادارہ جاتی قرنطینہ اور علاج کے اخراجات کو پورا کرنا ہے۔

یہ پروگرام مختلف حل اور آپشنز تلاش کرنے کی اجازت دیتا ہے جو حاجی کے لیے اپنے مناسک کو آرام سے اور آسانی سے ادا کرنے اور صحت و سلامتی کے ساتھ اپنے ملک واپس جانے کے لیے فوری علاج کی تلاش کو یقینی بناتا ہے۔

یہ پروگرام تمام مقامی بیمہ کمپنیاں فراہم کرتی ہیں اور پروگرام کی خدمات سے استفادہ کیا جا سکتا ہے کہ کووِڈ 19 کے انفیکشن کی صورت میں قرنطینہ کے ذریعے یا قریبی ہسپتال یا مرکز صحت سے اس کی رہائش گاہ پر جا کر اس کی ضرورت پڑنے کی صورت میں اور انہیں مالی مدد فراہم کی جا سکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں