حرمین ٹرین نے ہر 90 سکینڈ میں 3 ہزار حاجیوں کو منتقل کیا

سعودی عرب نے کراؤڈ مینجمنٹ کی اعلی مثال قائم کی، ٹرین نے گزشتہ برس ساڑھے 13 لاکھ افراد کو منتقل کیا: ماہرین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مختلف ماہرین نے کہا ہے کہ سعودی عرب ہجوم کے انتظام میں ایک علمبردار کی حیثیت سے سامنے آیا ہے اور اس نے حج کے موقع پر بڑے ہجوم کو بہترین انتظامات فراہم کرکے ایک مثال قائم کر دی ہے۔ اس کی ایک مثال مشاعر ٹرین بھی ہے جس ہر 90 سیکنڈ میں 3 ہزار حاجیوں کو سفر کی سہولت فراہم کی ہے۔

یہ بات جدہ میں منعقد ’’ حج ایکسپو 2023 ‘‘ کے دوران "ٹرانسپورٹیشن سروسز اور کراؤڈ مینجمنٹ کی کارکردگی اور حفاظت‘‘ کے سیشن کے دوران سامنے آئی۔

سیشن کے دوران ماہرین نے ٹرانسپورٹیشن اور کراؤڈ مینجمنٹ سروسز اور انسانی بہاؤ کے فروغ کے حوالے سے حکومتی شعبوں کی کوششوں کا جائزہ لیا۔ سیشن میں وزارت حج و عمرہ کی بہت سی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے اور سعودی ’’ویژن 2023‘‘ پروگرام کے اہداف کو حاصل کرنے کے لیے بات چیت کی گئی۔ تمام سرکاری اداروں کی شراکت داری میں ضیوف الرحمن کے تجربے کو بہتر بنانے، حاجیوں کو مناسک کی ادائیگی میں سہولت بنانے کی کوششوں کا جائزہ لیا گیا۔

ماہرین نے حرمین ٹرین کی طرف سے 72,000 مسافروں کو لے جانے کے لیے فراہم کی جانے والی عظیم خدمات کا خصوصی ذکر کیا۔ انہوں نے بتایا یہ ٹرین 800 مسافروں کو ڈبل ٹرپس کی سہولت فراہم کرتی ہے۔ حرمین ٹرین ہر 90 سیکنڈ میں 3 ہزار حاجیوں کو مکہ سے مدینہ منورہ کے درمیان منتقل کرتی ہے۔

حرمین ٹرین 72,000 مسافروں کو ایڈجسٹ کر سکتی ہے، ٹرین کو مکہ سے مدینہ تک 2.5 گھنٹے لگتے ہیں۔ گزشتہ برس ٹرین کے ذریعہ ساڑھے 13 لاکھ عازمین حج کو منتقل کیا گیا۔ اس دوران ٓ7.5 سے زیادہ افراد کو ہجوم کے انتظام کے لیے بطور ملازم رکھا گیا تھا۔

ماہرین نے کہا زائرین اور عمرہ کرنے والوں کے استقبال کے لیے تمام انسانی اور تکنیکی صلاحیتوں اور وسائل کو بروئے کار لانے کے لیے مملکت نے شاندار سعی کی ہے۔ مختلف ملکوں کے ایئرپورٹس سے شروع ہوکر سعودی ہوائی اڈوں سے گزرنے اور مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں مناسک حج ادا کرنے اور واپسی اپنے ملکوں تک پہنچنے کے تمام مراحل میں حاجیوں کو سہولیات فراہم کرنے کی کوشش کی جاتی ہے۔

سیشن میں مختلف اوقات میں سکیورٹی، تنظیم اور انسانیت کے حوالے سے زائرین اور عمرہ کرنے والوں کے ہجوم کو کنٹرول کرنے اور ان کے انتظام میں سپیشل سکیورٹی فورسز کی کوششوں کی تعریف کی گئی۔ ماہرین نے بتایا کہ حرمین ٹرین منصوبے میں ٹرپس کے وقت میں جو نظم و ضبط حاصل کیا گیا اس میں 98 فیصد تک اضافہ دیکھا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں