حج 1444

’سن سٹروک‘ سے ایک ہزار حاجی متاثر،حجاج کو دھوپ میں محتاط رہنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

آج بدھ کو عیدالاضحیٰ کے پہلے روز حجاج کرام نے مسجد الحرام میں واپسی کے بعد طوافہ افاضہ شروع کیا۔ دوسری طرف "العربیہ" اورالحدث" کے نامہ نگار نے آج بدھ کو اطلاع دی کہ سورج کی تپش کے باعث حجاج کرام میں سن سٹروک کے1000 سے زائد کیسز سامنے آئے ہیں۔

دوسری طرف سعودی وزارت صحت نے حجاج کرام کو براہ راست سورج کی روشنی میں نہ آنے اور انتظار کی لائنوں میں زیادہ دیر تک کھڑے نہ ہونے کی ہدایت کی ہے۔

وزارت صحت نے گرمی کی شدت میں ہیٹ سٹروک کی علامت ظاہر ہونے کی صورت میں فوری طبی عملے کو مطلع کریں۔ ان علامت میں سر درد، متلی، چکر آنا، کمزوری، چڑچڑاپن، پیاس، ضرورت سے زیادہ پسینہ آنا، جسم کا زیادہ درجہ حرارت اور پیشاب کی پیداوار میں کمی شامل ہیں۔

وزارت صحت نے آج اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ کے ذریعے ضیوف الرحمٰن سے کہا کہ سورج کے سامنے آنے سے گریز کریں، دھوپ میں چھتری کا استعمال کریں، چوٹ لگنے کی صورت میں کافی ٹھنڈا پانی پئیں، جوتے اور جرابوں سمیت غیر ضروری کپڑے اتاریں، زخمی شخص کو کولڈ کمپریس سے ٹھنڈا کریں اور وزارت صحت کے ایمرجنسی نمبر937 پر کال کریں۔

گرمی کی تھکن ایک پریشان کن اور ہنگامی بیماری ہے جو جان لیوا بھی ہو سکتی ہے۔ سعودی وزارت صحت کے ترجمان نے خبردار کیا کہ عازمین حج کے مناسک ادا کرنے کے دوران چھتری استعمال کریں، پانی زیادہ پیئں، سن اسٹروک سے بچاؤ کے لیے احتیاطی تدابیر پر عمل کریں اور مائعات کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں