.

فیلکس بوم گارٹنر کا 24 میل کی بلندی سے محفوظ سپر سانک جمپ

ساؤنڈ بیرئیر توڑنے والے پہلے چھاتہ بردار انسان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
آسٹریا سے تعلق رکھنے والے چھاتہ بردار فیلکس بوم گارٹنر نے نیو میکسکو کے صحرا میں ایک بہت بڑے غبارے کی مدد سے چوبیس میل کی بلندی سے کامیابی سے چھلانگ لگائی ہے اور وہ محفوظ انداز میں زمین پر اترنے میں کامیاب رہے ہیں۔

فیلکس بوم گارٹنر فضا میں سب سے زیادہ بلندی سے غوطہ خوری کرکے ساؤنڈ بئیرئیر کو توڑنے والے پہلے انسان بھی بن گئے ہیں۔انھیں چوبیس میل کی زیادہ بلندی سے ایک کیپسول کے ذریعے فضا میں چھوڑا گیا تھا اور انھیں فضا سے زمین تک پہنچنے میں قریباً بیس منٹ کا وقت لگا ہے۔ان کا فضا میں اڑنے اور چھاتہ برداری کا عمل پوری دنیا میں ٹی وی چینلوں پر براہ راست دکھایا گیا ہے۔

ان کی سو سے زیادہ افراد پر مشتمل ٹیم میں امریکی فضائِیہ کے ایک ریٹائرڈ چھاتہ بردار کرنل جوزف کیٹنگر بھی شامل تھے اور فیلکس بوم گارٹنر دراصل انھی کا 1960ء میں قائم کردہ ریکارڈ توڑنے کی کوشش کر رہے تھے۔ انھوں نے تب ایک لاکھ دو ہزار آٹھ سو فٹ (اکتیس ہزار تین سو تینتیس میٹر) کی بلندی سے چھلانگ لگائی تھی۔

کرنل جوزف کیٹنگر نے ریڈیو پر کمنٹری کرتے ہوئے کہا کہ فیلکس بوم گارٹنر کی فضا سے زمین پر اترنے کی رفتار اور چھاتہ برداری کے دوسرے پیرا میٹرز بالکل درست رہے ہیں۔تنیتالیس سالہ آسٹرین غوطہ خور کی فضا سے زمین پر اترنے کی ایک ہفتے میں یہ دوسری کوشش تھی۔ انھوں نے گذشتہ ہفتے بھی انتہائی بلندی سے چھاتہ برداری کا مظاہرہ کرنے کے لیے تمام تیاریاں مکمل کرلی تھیں لیکن آخری لمحے ہوا کی رفتار تیز ہونے کی وجہ سے ان کا غوطہ خوری کا پروگرام منسوخ کر دیا گیا تھا۔

فضا سے سب سے زیادہ بلندی سے چھاتہ برداری کا مظاہرہ العربیہ کی مادر کمپنی ایم بی سی کے ایک اور چینل ''ایم بی سی ایکشن'' سمیت دنیا کے چار چینلز نے براہ راست دکھایا ہے اور ان چاروں چینلوں ہی کو براہ راست یہ شو دکھانے کے حقوق حاصل تھے جبکہ دوسرے چینلز نے انھی سے فیڈ لے کر چھاتہ برداری کے اس ریکارڈ ساز مظاہرے کو لائیو نشر کیا ہے۔