.

ملائشیا دن میں 25 مرتبہ غسل پر خاتون ملازمت سے فارغ

ہفتے میں دو گیلن شیمپو کا استعمال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ملائشیا کی چالیس سالہ جولیا بنت عبداللہ صفائی کے ایسے خبط میں مبتلا ہیں کہ جس نے ان کی زندگی اجیرن کر رکھی ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق جولیا پورے دن میں پانچ گھنٹے باتھ روم میں گزارتی ہیں۔ وہ دن میں 25 مرتبہ غسل جبکہ 300 بار ہاتھ دھوتی ہیں۔ نظافت کے وسواس میں مبتلا ملائشین خاتون ہفتے میں دو گیلن شیمپو جبکہ کئی درجن صابن کی ٹکیاں استعمال کرتی ہیں۔

صفائی کے اسی خبط کی وجہ سے جولیا روزانہ کام پر تاخیر سے پہنچتی تھی جس کے باعث اسے ملازمت سے نکال دیا گیا ہے۔ جولیا کے غیر معمولی نہانے دھونے پر جولیا کے دفتر کو ان کی موجودگی میں اپنے ٹوائلٹس میں شیمپو اور صابن کا اضافی بل دینا پڑ رہا تھا۔ حکام نے جولیا کو ملازمت سے برخاست کرنے میں ہی عافیت جانی۔

رپورٹ کے مطابق جولیا اب پرانی اشیاء جمع کر کے انہیں بطور 'انٹیک' فروخت کر رہی ہے تاکہ وہ صفائی کے لئے شیمپو اور صابن کا اضافی خرچہ پورا کر سکے۔ اپنی نفسیاتی بیماری کا ذکر کرتے ہوئے جولیا نے بتایا کہ ہاتھ دھونے کی عادت اسے بیس سال کی عمر میں اس وقت پڑی جب وہ ایک کلینکل لیبارٹری میں کام کرتی تھی، جہاں اسے بول اور براز کے نمونے دن میں کئی مرتبہ ٹیسٹ کرنا ہوتے تھے، ہر ٹیسٹ کے بعد وہ طبی اصول کے مطابق ہاتھ دھویا کرتی تھی۔