.

سمارٹ فونز ایپلی کیشنز کے ذریعے سگریٹ کی مارکیٹنگ

6 ملین افراد ابتک یہ ایپلی کیشنز ڈاؤن لوڈ کر چکے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
دنیا کے مختلف ملکوں میں مضر صحت رحجان کی وجہ سے پبلک مقامات پر تمباکو نوشی کی ممانعت کے بعد سگریٹ کی فروخت میں خاطر خواہ کمی واقع ہو رہی ہے۔

سگریٹ بنانے والی متعدد کمپنیوں نے نو عمر صارفین تک اپنی منصوعات کی تشہیر کی خاطر جدید طریقہ اختیار کیا ہے۔ اب روایتی میڈیا کے علاوہ سگریٹ ساز ادارے انٹرنیٹ کے ذریعے انسداد سگریٹ نوشی کی مہم کو ناکام بنانے کے لئے میدان عمل آئے ہیں۔

"تمباکو کنٹرول" میگزین میں شائع ہونے والی حالیہ تحقیقی رپورٹ کے مطابق ریسرچرز نے اپیل سٹور اور اینڈرائڈ مارکیٹ میں سگریٹس کی اشتہاری مہم کے لئے 107 ایپلی کیشنز کی نشاندہی کی ہے۔

ان سٹورز سے ڈاؤن لوڈ کی جانے والی بعض ایپلی کیشنز کے ذریعے صارف آن لائن سموکنگ کا لطف اٹھا سکتا ہے۔ سگریٹ کے مہنگے برانڈز بھی صارف ان ایپلی کیشنز کے ذریعے جمع کر سکتا ہے جنہیں حقیقیت میں وہ خریدنے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ مختلف مشہور سگریٹ برانڈز کے اشہتاری وال پیپرز بھی مفت ڈاؤن لوڈ کئے جا سکتے ہیں۔

تحقیقی رپورٹ تیار کرنے والوں کے مطابق آن لائن سٹورز پر ڈاؤن لوڈنگ کے لئے ملنے والی یہ ایپلی کیشنز انٹرنیشنل ہیلتھ آرگنائزیشن کے کنونشن کی شق 13 کی خلاف ورزی ہے جس کے بموجب میڈیا کے ذریعے سگریٹ کی اشتہاری مہم پر پابندی عائد ہے۔

آن لائن ملنے والی 107 ایپلی کیشنز میں سے ماہرین کے مطابق 42 ایپلی کیشنز 'اینڈرائڈ مارکیٹ' میں موجود ہیں جسے ابتک چھے ملین افراد ڈاؤن لوڈ کر چکے ہیں۔

محققین کے مطابق نوجوان ان ایپلی کیشنز سے سب سے زیادہ متاثر ہوتے ہیں کیونکہ اس ایج گروپ میں موبائل فونز کا استعمال سب سے زیادہ ہوتا ہے۔ تحقیق میں ایپلی کیشنز تیار کرنے والوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ اپنی پراڈکٹ کے حوالے سے کڑی نگرانی کا معیار مقرر کریں تاکہ ممنوعہ ایج گروپ کے افراد کم سے کم اسے دیکھ اور استعمال کر سکیں۔