.

فرانس کی انتہا پسند تنظیم مسجد کی تعمیر پر چراغ پا

مسلمانوں کی فرانس سے بیدخلی پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
وسطی فرانس کے شہر پواکی میں دائیں بازو کی انجمن سے وابستہ نوجوانوں نے شہر میں مسجد چھت پر چڑھ کر مسجد کی تعمیر کے خلاف اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا جس پر شہر کی مسلمان اقلیت انتہائی دل گرفتہ ہے۔ اس واقعے نے چند روز قبل فرانسیسی وزیر داخلہ کی زیر نگرانی سٹراس برگ میں فرانس کی سب سے بڑی مسجد کے افتتاح کے بعد مذہبی آہنگی کا شاندار مظاہرہ گہنا دیا ہے۔ افتتاحی تقریب میں اسلام، عیسائی اور یہودی مذہب کے نمائندوں نے شرکت کی۔

سٹراس برگ مسجد کی افتتاحی تقریب کو میڈیا میں بھی بڑے پیمانے پر کوریج ملی۔ یہ کوریج اس بات کی دلیل تھی کہ فرانسیسی حکومت مسلم کیمونٹی کو زیادہ سے زیادہ حقوق دلانا چاہتی ہے تاکہ مسلمانوں کے خلاف فرانس میں دائیں بازو کی نمائندہ جماعتوں کی انتہا پسندی کا توڑ کیا جا سکے۔

'جنریشن شناخت' نامی تنظیم کی جانب سے گزشتہ دنوں مسجد کی توہین کے واقعے کے بعد یہ شکوک تقویت پکڑ رہے ہیں کہ فرانسیسی حکومت دائیں بازو کی انتہا پسند جماعتوں پر کنٹرول کرنے میں ناکام ہے۔

'فرانس ٹرائز' نامی ٹی وی چینل پر دکھائی جانے والی ویڈیو رپورٹ میں 'جنریشن شناخت' تنظیم کے نوجوان مسجد کی چھت پر کھڑے ہو کر اس بات کا پرچار کر رہے ہیں کہ وہ پرانی سوچ کے نمائندہ نئی نسل ہیں۔ ویڈیو میں مسجد کی چھت پر موجود مظاہرین نے ہاتھوں میں ایسے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے ہیں جن پر مسلمانوں کے خلاف نعرے درج تھے۔