.

دنیا کے غریب ترین صدر 1250 ڈالر ماہانہ میں زندگی کر رہے ہیں

مشاہرے کا 90 فیصد خیراتی کاموں کے لئے وقف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ایک طرف دینا ایسے حکمرانوں سے بھری پڑی ہے کہ جو اپنی آمدن کو چھپانے اور تمام تر سرکاری مراعات کے باوجود ہمہ وقت اس میں اضافے کے لئے کوشاں نظر آتے ہیں۔ دوسری جانب یوراگوائے کے صدر خوزے موجیکا اپنی تنخواہ کا 90 فیصد حصہ خیراتی کاموں میں صرف کر کے دنیا کے 'فقیر مگر سے سب سے زیادہ سخی صدر' ہونے کا اعزاز حاصل کیا ہے۔

چہتر سالہ خوسے موجیکا مارچ 2010ء سے منصب صدارت سنبھالنے کے بعد اپنی اہلیہ سینٹر لوسیا ٹوبولانسکی کے ہمراہ ایک کچے مکان میں رہائش پذیر ہیں۔ امارات سے شائع ہونے والے روزنامے 'البیان' کے مطابق لوسیا بھی اپنے پارلیمانی اعزازیئے کا بڑا حصہ خیرات کر دیتی ہیں۔

مسٹر موجیکا نے ایک حالیہ انٹرویو میں انکشاف کیا کہ ان کے پاس قیمتی متاع ان کی 'فوکس ویگن' ہے، جس کی مالیت 1945 امریکی ڈالرز ہے انہوں نے بتایا کہ بطور صدر انہیں ماہانہ 12,500 ڈالرز مشاہرہ ملتا ہے لیکن وہ اپنی گزر اوقات کے لئے صرف 1250 ڈالر نکال کر باقی رقم مختلف خیراتی انجموں کو دے دیتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ 1250 ڈالر ان کے لئے باعزت زندگی گزارنے کے لئے کافی ہیں، حالانکہ بہت سے لوگ اس سے بھی انتہائی کم آمدنی پر گذارا کر رہے ہیں۔

یہ امر دلچپسی سے خالی نہیں کہ موجیکا کا نہ کوئی بینک اکاؤنٹ ہے اور نہ ہی انہوں نے کسی کا قرضہ دینا ہے۔ وہ فارغ وقت اپنی کتیا 'مانویلا' کے ساتھ گزارتے ہیں۔ بہ قول موجیکا: "اپنی صدارتی ٹرم پوری کرنے کے میں باقی زندگی اہلیہ کے ہمراہ اپنے پرسکوں طور پر فارم ہاؤس پر گذارنا چاہتا ہوں۔

ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کی حالیہ رپورٹ میں اس بات کا اعتراف کیا گیا ہے کہ موجیکا کے دور حکومت میں کرپشن میں بہت زیادہ کمی واقع ہوئی ہے۔ جنوبی امریکا میں واقع یہ ملک خطے میں سب سے کم کرپشن والے ملکوں کی فہرست میں دوسرے نمبر پر آتا ہے۔ یوراگوائے کے صدر کا عوام کے نام پیغام ہے کہ مثالی رہنما بننے کے لئے ضروری ہے کہ آپ اچھے کام کا آغاز خود کریں تاکہ دوسروں کو اس کی پیروی کرنا آسان ہو۔"