.

فرانسیسی وزیر کی غیر اخلاقی حرکت سے الجزائری عوام مشتعل

استعماری عہد کے دوران اقدامات پر فرانس نادم نہیں'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
الجزائر کے ایک وزیر محمد الشریف عباس نے ایک ٹی وی مذاکرے میں نیکولا سرکوزی کے دور حکومت میں وزیر دفاع گیرالڈ لونگیٹ سے الجزائر میں فرانسیسی استعمار دور کے مظالم پر معافی کا مطالبہ کیا لیکن مسٹر گیرالڈ نے اس مطالبے کا جواب آن سکرین ایک اشتعال انگیز غیر اخلاقی حرکت کر کے دیا، جسے ناظرین اپنی ٹی وی سکرینز پر دیکھ کر ششدر رہ گئے۔

العربیہ ٹی وی کی ایک رپورٹ کے مطابق الجزائری وزیر کے منہ سے معافی کے مطالبے کا سن کر فرانس میں پیپلز موومنٹ کی ٹکٹ پر سینٹ کے رکن منتخب ہونے والے سابق وزیر اپنی نشت پر کھڑی ہو گئے اور انہوں نے الجزائری مطالبہ زبانی طور پر مسترد کرنے کے بجائے کھڑے ہو اپنے ہاتھ اور بازو سے ایک 'غیر اخلاقی' اشارہ کیا۔ انہوں نے بعد ازاں ایک بیان میں اپنی 'غیر اخلاقی' حرکت کا دفاع بھی کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ فرانس استعماری دور میں اپنی الجزائر موجودگی پر نادم نہیں تاہم انہوں نے کہا کہ اب ہم دونوں ملکوں کے درمیان پرامن تعلقات پروان چڑھتا دیکھتا چاہتے ہیں۔ مسٹر گیرالڈ نے کہا کہ استعماری دور کا بار باز ذکر تعلقات کو بہتر نہیں بنایا جا سکتا۔

یہ واقعہ الجزائری انقلاب کی 58 ویں سالگرہ کے موقع پر پیش آیا۔ اس سے قبل سرکوزی دور ہی کے سابق فرانسیسی وزیر صنعت کریسٹین اسٹروز نے 'فرانسیسی الجزائر' کی اصطلاح استعمال کر کے الجزائر کے عوام کا دل دکھایا تھا۔