.

4 امریکی ریاستیں وائٹ ہاؤس کے فاتح کا تعین کریں گی

اوباما کو دو ریاستوں میں معمولی برتری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
امریکا کے شمالی علاقوں میں تباہ کن سینڈی طوفان کے بعد چھے نومبر کو ہونے والے صدارتی انتخابات کے لیے دونوں امیدواروں براک اوباما اور مِٹ رومنی نے انتخابی مہم دوبارہ شروع کر دی ہے۔

ادھر نئے صدر کی کامیابی میں کلیدی کردار ادا کرنے والی چار اہم ریاستوں اوہایو، ورجینیا، فلوریڈا اور کولو راڈو میں دونوں امیدواروں کے درمیان کانٹے دار مقابلے کا امکان دیکھا جا رہا ہے۔ صدارتی مہم پر نظر رکھنے والی'اپسوس' فاؤنڈیشن کے جاری سروے کے مطابق براک اوباما کو اپنے حریف مٹ رومنی پر ریاست اوہایو میں تین پوائنٹ اور ورجینیا میں دو پوائنٹ کی برتری حاصل ہے جبکہ ریاست کولوراڈو میں ڈیموکریٹس امیدوار رومنی کو ایک پوائنٹ کی برتری حاصل ہے۔ فلوریڈا میں دونوں امیدوار برابر مقابلہ کر رہے ہیں۔



برطانوی خبر رساں ایجنسی'رائیٹرز' کے مطابق مذکورہ چار ریاستیں ہی چھ نومبر کے انتخابات میں وائٹ ہاؤس کے ’فاتح‘ کا تعین کرنے میں کلیدی کردار ادا کریں گی۔ امریکا کی دیگر ریاستوں میں ڈیموکریٹس امیدوار مٹ رومنی کی برتری دیکھی جا رہی ہے، تاہم مسٹر رومنی کو انتخابی دنگل میں امریکا کی نو بڑی ریاستوں سے اپنی جیت یقینی بنانا ہو گی۔ ریاست اوہایو میں کامیابی کے بغیر رومنی کا وائٹ ہاؤس فتح کرنا مشکل ہو گا۔ اپسوس کے سروے کے مطابق اوہایو میں اوباما کی پوزیشن قدرے مضبوط ہے اور رومنی کو مشکلات کا سامنا ہے۔



براک اوباما نے اوہایو سے 48 پوائنٹس حاصل کئے ہیں جبکہ رومنی کے پاس 45 پوائنٹس ہیں۔ یوں یہ تین پوائنٹس کا فرق اگرچہ معمولی ہے لیکن یہ برقرار رہا تو رومنی کے لیے اس ریاست سے انتخابات میں فتح حاصل کرنا مشکل ہو جائے گا۔