.

جزیرہ ابو موسی میں نئی ایرانی فوجی یونٹ کا قیام

نئے دستے وسیع اختیارات اور جدید ہتھیاروں سے لیس ہوں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ایران نے بندر لنجہ ریجن کے لئے پاسداران انقلاب کی نئی عسکری یونٹ قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق بندر لنجہ ریجن میں تہران کے زیر قبضہ اماراتی جزیرہ ابو موسی بھی واقع ہے۔

بریگیڈئر جنرل محمد علی جعفری کو 5 ویں بحری یونٹ کا کمانڈر مقرر کیا گیا ہے۔ اس یونٹ میں جنگی بحری جہازوں پر سرعت سے حملہ آور ہونے کی صلاحیت رکھنے والی جدید کشتیاں، زمین سے سمندر، سمندر سے سمندر اور سمندر سے فضا میں مار کرنے والے میزائل سسٹمز شامل ہوں گے۔ پاسداران انقلاب کی ہم خیال 'فارس' نیوز ایجنسی کے مطابق نئے تشکیل دیئے یونٹ میں جدید لڑاکا بحری بیڑے بھی شامل ہوں گے۔

بندر لنجہ کا علاقہ مشرقی ساحل بندر عباس [ہرمز] تک پھیلا ہوا ہے۔ وہاں پر انتہائی قدیم زمانے سے عرب قبائل آباد ہیں۔ پاسداران انقلاب کی بحری فورس کے علاقے میں پہلے ہی چار کمانڈ یونٹس موجود ہیں۔ ان میں دو یونٹس خلیج کے علاقے ہرمزکان اور بوشہر میں واقع ہیں۔

نئی فوجی یونٹ کے اعلان کے بعد پاسداران انقلاب کے پاس پانچ بحری یونٹس ہو جائیں گے۔ ایران پر حملے کی صورت میں اگر تہران اور خلیجی علاقے میں اعلی ایرانی قیادت کا آپس میں رابطہ ختم ہو جاتا ہے تو ایسی صورتحال میں ان بحری یونٹس کو ایران پر ہونے والی کسی جارحیت کی صورت میں آزادانہ جواب دینے کا اختیار حاصل ہو گا۔