.

امریکی صدارتی انتخاب کے ابتدائی گھنٹوں میں 11 ملین ٹویٹس کا عالمی ریکارڈ

انتخابی محاذ گرم رکھنے میں سماجی ویب سائیٹس کا کلیدی کردار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سماجی رابطے کی مقبول ویب سائٹ 'ٹیوٹر' کے مطابق امریکا میں صدارتی انتخابات کی ابتدائی چند ساعتوں میں ٹویٹر پر ایک کروڑ 10 لاکھ لوگوں نے تبادلہ خیال کیا ہے۔ ٹویٹر انتطامیہ کے مطابق ویب سائٹ پر سیاسی ایونٹس کے بارے میں تبصروں کی یہ اب تک کی سب سے بڑی تعداد ہے۔



برطانوی خبر رساں ایجنسی 'رائیٹرز' کی رپورٹ کے مطابق ٹویٹر انتظامیہ نے دعویٰ کیا ہے کہ امریکا میں موجودہ صدر اور ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار براک اوباما اور ری پبلیکن میٹ رومنی کے درمیان انتخابی مناظروں کے ساتھ ہی بڑی تعداد میں لوگوں نے تبادلہ خیال شروع کر دیا تھا لیکن کل منگل کے روز پولنگ کے بعد نوے منٹ میں قریبا 13 لاکھ تبصرے کیے گئے ہیں۔ جو کہ ویب سائیٹ پر سیاسی امور کے بارے میں تبصروں کا عالمی ریکارڈ ہے۔



منگل کی شام انتخابی نتائج کی آغاز کے ساتھ ہی ٹیوٹر صارفین نے بریکنگ ٹویٹس دینا شروع کر دی تھیں جو اگلے چند گھنٹوں میں گیارہ ملین سے تجاوزہ کر گئیں۔

ٹویٹر سے وابستہ ایک عہدیدار آدم شارپ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ کے اپنے صفحے پر ٹویٹ کرتے ہوئے بتایا کہ امریکی صدرارتی امیدواروں کے مناظروں کے دوران ایک کروڑ لوگوں نے ٹویٹر پر تبادلہ خیال کیا تھا جس کے بعد ہمیں یہ توقع تھی کی انتخابات شروع ہونے کے بعد یہ تعداد مزید بڑھ سکتی ہے۔



خیال رہے کہ امریکا میں صدارتی انتخابات کے لیے محاذ گرم کرنے میں سماجی رابطے کی ویب سائیٹس بالخصوص فیس بک اور ٹیوٹر کا کلیدی کردار سمجھا جاتا ہے۔ الیکشن مہم کے دوران سماجی ویب سائیٹس پر 22 فی صد امریکیوں نے اپنے پسندیدہ امیدوار کا اعلان کر دیا تھا اور وہ ان ویب سائیٹس پر ان کی حمایت میں مہم بھی چلا رہے تھے۔