زخمی موریتانوی صدر کے صاحبزادے نے زمام کار اپنے ہاتھ میں لے لی؟

احمد بن عبدالعزیز کے اقدام پر میڈیا کی تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read
Advertisement
موریتانیہ کے بعض اخبارات نے احمد ولد عبدالعزیز پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے اپنے علیل والد کی فرانسیسی ڈاکٹر کے ہمراہ تصاویر چوری کر کے میڈیا تک پہنچائی ہیں تاہم مذکورہ تصویریں عوامی حلقوں میں ابھی تک متنازعہ بنی ہوئی ہیں۔ کچھ لوگوں کا خیال ہے کہ یہ تصاویر جعلی ہیں اور احمد ولد عبدالعزیز نے اپنے والد کی علالت کو تشویشناک قرار دینے کے لیے جاری کی ہیں تاکہ ان کی عدم موجودگی میں وہ ایوان حکومت پر قبضہ کر سکیں۔

خیال رہے کہ صدر محمد ولد عبدالعزیز پچھلے ماہ اپنے ایک فارم ہاؤس کے دورے کے بعد واپس لوٹ رہے تھے کہ ایک سیکیورٹی اہلکار کی بندوق سے چلنے والی گولی لگنے سے زخمی ہو گئےتھے۔ اس کے بعد سے وہ بیرون ملک بھی علاج کے لیے گئے تھے۔ ان کی عدم موجودگی میں حکومت کی کمزوری کا تاثر بھی زور پکڑ رہا تھا۔

اس دوران صدر ولد عبدالعزیز کی جانشینی کے لیے آرمی چیف محمد ولد الغزوانی کا بھی نام لیا جاتا رہا ہے۔ فائرنگ کے بعد صدر العزیز کی صحتیابی کے حوالے سے سرکاری سطح پر’سب اچھا ہے‘ کی رپورٹ دی جاتی رہی ہے تاہم صدر کی پردہ پوشی نے ان کی صحت کے بارے میں بہت سے سوالات بھی جنم دیے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں