.

بارسلونا کے لیونل میسی کی ریاض ائیر پورٹ آمد پر افراتفری

سکیورٹی محافظ نے ارجنٹائنی فٹ بالر پر بندوق تان لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ارجنٹائن کی قومی فٹ بال ٹیم اور ایف سی بارسلونا کے سپر اسٹار لیونل میسی کی سعودی دارالحکومت ریاض کے ہوائی اڈے پر آمد کے موقع پر افراتفری پھیل گئی اور سکیورٹی اہلکار بندوقوں کے سائے میں انھیں صحافیوں اور ان کے مداحوں کے حصار سے نکال کر باہر لے جانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

ہوائی اڈے پر سکیورٹی اہلکاروں اور مسلح محافظوں نے میسی کو ان کے پُرجوش مداحوں سے بچانے کے لیے ان کے گرد حصار قائم کر دیا۔ اس دوران ایک موقع ایسا بھی آیا کہ ایک سکیورٹی اہلکار نے اپنی بندوق میسی کے چہرے پر تان لی۔ ان کی یہ تصویر انٹرنیٹ پر متعدد ویب سائٹس پر پوسٹ کی گئی ہے۔ اس میں وہ حیران و پریشان نظر آ رہے ہیں۔

آئیرلینڈ کی کھیلوں کی ایک ویب سائٹ جے او ای نے لکھا ہے کہ ''ماضی میں یہ بات مذاق کے طور پر کہی جاتی رہی ہے کہ لیونل میسی کو صرف بندوق کے ذریعے ہی روکا جا سکتا ہے لیکن اتفاق سے ریاض کے ہوائی اڈے پر اس کا عملی مظاہرہ بھی ہو گیا ہے اور وہ اپنے چہرے پر بندوق تانے جانے پر ہکا بکا نظر آ رہے ہیں''۔

سعودی گزٹ نے لکھا ہے کہ ہوائی اڈے اور اس کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی اور ہوائی اڈے کی جانب جانے والی شاہراہ پر پانچ سکیورٹی چیک پوائنٹس قائم کیے گئے تھے لیکن اس کے باوجود میسی کے مداح ان کی جھلک دیکھنے کے لیے ہوائی اڈے کے اندر پہنچنے میں کامیاب ہو گئے۔

اخبار نے لکھا ہے کہ میسی اپنی فیملی کے ہمراہ ایک نجی پرواز کے ذریعے ٹیم کے باقی کھلاڑیوں سے قبل آئے تھے۔ ان کی ٹیم کا بدھ کو سعودی عرب کی ٹیم سے میچ ہو رہا ہے۔ سماجی روابط کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ان کی آمد سے متعلق دلچسپ تبصرے کیے گئے ہیں اور ایک صاحب نے لکھا ہے کہ ''افسر، ہوشیار باش! اگر اس کھلاڑی کا انتقال ہو جاتا ہے تو ہم سب مشکل میں پھنس جائیں گے''۔

اس لکھاری نے مزید لکھا کہ ''ائیر پورٹ پر دھاوا بولنے کا مقصد میسی کو ڈرانا دھمکانا تھا تا کہ وہ اپنے کھیل پر توجہ مرکوز نہ کر سکیں اور پریشان ہو جائیں'' لیکن اس کا پتا تو میچ کے دوران ہی چل سکے گا کہ وہ ڈرے ہیں یا نہیں۔

واضح رہے کہ پچیس سالہ میسی نے گذشتہ اتوار کو عظیم فٹ بالر پیلے کا ایک سیزن میں سب سے زیادہ چھہتر گول کرنے کا ریکارڈ توڑا ہے اور انھوں نے بارسلونا کی جانب سے مالورکا کلب کے خلاف کھیلے گئے میچ میں دو گول کیے تھے۔اس میچ میں ان کی ٹیم کو چار دو سے کامیابی حاصل ہوئی تھی۔ انھوں نے اب تک چونسٹھ گول اپنی ٹیم اور بارہ ارجنٹائن کی جانب سے کھیلتے ہوئے کیے ہیں۔ وہ مسلسل چار مرتبہ عالمی کھلاڑی ہونے کا اعزاز بھی حاصل کر چکے ہیں۔