.

نامعلوم ہیکر گروپ کے اسرائیلی ویب سائٹس پر حملے

غزہ پر بمباری کا ردعمل، متعدد اسرائیلی سائٹس ناکارہ بنانے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ایک نامعلوم ہیکر گروپ نے غزہ کی پٹی پر اسرائیلی فوج کے حالیہ جارحانہ حملوں کے ردعمل میں صہیونی حکومت کی ویب سائٹس پر حملے شروع کردیے ہیں اور اس کی متعدد ویب سائٹس کو ناکارہ بنانے کا دعویٰ کیا ہے۔

اس نامعلوم گروپ نے اپنے ٹویٹر پیغام میں کہا ہے کہ ''اب تک بہت سی اسرائیلی ویب سائٹس کا حلیہ بگاڑا جا چکا ہے۔ اس گروپ کا ٹویٹر اکاؤنٹ @YourAnonNews ہے اور اس نے اپنے پیروکاروں (آن لائن قارئین) سے کہا ہے کہ وہ اسرائیلی حکومت اور فوج کی چالیس سے زیادہ ویب سائٹس کو تباہ کرنے کے لیے ان کی مدد کریں۔

گلوبل پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق اس نامعلوم گروپ نے اسرائیلی فوج، وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو کے علاوہ سکیورٹی اور مالیاتی اداروں کی ویب سائٹس کا حلیہ بگاڑنے اور انھیں تباہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

غزہ شہر میں بجلی نہ ہونے کی وجہ سے بہت سے محصور فلسطینیوں کی انٹرنیٹ تک رسائی نہیں رہی ہے لیکن ہیکروں کے اس گروپ نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر انھیں ہدایت کی ہے کہ وہ ان سے رابطے میں رہیں اور وہ فون ہونے کی صورت میں اس ویب سائٹ کے ذریعے انٹرنیٹ تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں:



http://pastebin.com/6dYQruHu”

اس گروپ نے ایک سائٹ پر اپنا پیغام بھی پوسٹ کیا ہے جس میں کہا ہے کہ انھوں نے اسرائیل کی سکیورٹی اور نگرانی کی ایک اہم ویب سائٹ کو ناکارہ کر دیا ہے اور جب تک بزدل صہیونی ریاست بے گناہ شہریوں پر حملے جاری رکھتی ہے تو وہ بھی اپنی کارروائیاں جاری رکھے گا۔

لیکن ہیکروں کے اسرائیلی ویب سائٹس کو ہیک کرنے کے دعوے کے باوجود فوربس میگزین کے لکھاری اینڈی گرین برگ کا کہنا ہےکہ اسرائیل کی بہت سی ویب سائٹس ابھی آن لائن موجود ہیں جبکہ اسرائیل نواز بعض لکھاریوں نے نامعلوم گروپ کی کارروائی کو یہود مخالف قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ وہ ہٹلر کے نقش قدم پر چلتے ہوئے عبرانی زبان میں آن لائن موجود تمام ویب سائٹس کو بند کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔