.

مصر میں سکول بس اور ٹرین میں تصادم، 49 بچے جاں بحق

وزیر مواصلات اور چیئرمین ریلوے مستعفی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصر میں ہفتے کی صبح ٹرین اور سکول بس کے تصادم میں 49 بچے جان بحق اور 15 دوسرے زخمی ہو گئے۔ اسیوط کے گورنر نے حادثے کا سبب جاننے کے لئے تحقیقاتی کمیٹی تشکیل دیدی۔ اسیوط ٹرین حادثہ ملکی تاریخ کا بدترین ایکسیڈنٹ قرار دیا جا رہا ہے۔

العربیہ ٹی وی نے خبر رساں ادارے 'مینا' کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایک مقامی نجی سکول النور الازھری کی بس مصری شہر اسیوط سے قاہرہ جانے والی تیز رفتار ٹرین نمبر 165 سے ٹکرا گئی۔ حادثے میں بس کا ڈرائیور اور کلینر بھی جاں بحق ہو گئے۔

حادثے کی اطلاع ملتے ہی قریبی گاؤں المنذرہ سے متاثرہ بچوں کے والدین اپنے نونہالوں کو تلاش اور دیہاتی امدادی کاموں کے لئے بڑی تعداد میں پھاٹک پہنچ گئے۔

مقامی مرکز صحت کے ڈائریکٹر صبری غانم نے بتایا کہ ٹرین اور سکول بس حادثے کے نو [زخمی] بھی علاج کے لئے مرکز صحت لائے گئے ہیں۔

ادھر مصری وزیر مواصلات محمد رشاد المتینی نے ریلوے کے چیئرمین انجینئر مصطفی قناوی کا استعفی قبول کرتے ہوئے ان کا کیس مزید تحقیق کے لئے متعلقہ حکام کے حوالے کر دیا ہے۔

سرکاری خبر رساں ایجنسی کو دیئے بیان میں المتینی حادثے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے خود بھی اپنا استعفی صدر جمہوریہ کو پیش کر دیا ہے۔