.

سابق ایرانی صدر رفسنجانی کی اسیر بیٹے اور بیٹی سے ملاقات

مہدی اور فائزہ ہاشمی پر حکومت مخالف پروپیگنڈے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سابق ایرانی صدر اور موجودہ گارڈین کونسل کے چیئرمین علی ھاشمی رفسنجانی نے شمالی تہران کی ایفین جیل میں اپنے صاحبزادے مہدی ہاشمی اور بیٹی فائزہ ہاشمی سے ملاقات کی ہے۔ دونوں بہن، بھائی سن 2009ء کے صدارتی انتخابات کا نتیجہ مسترد کرنے اور حکومت کے خلاف اشتعال انگیز پرو پیگنڈے کے الزام میں پابند سلاسل ہیں۔ ہاشمی کی اپنے بچوں سے جیل میں ملاقات پر اصلاح پسند حلقوں میں تشویش بھی پائی جا رہی ہے۔



گارڈین کونسل کے ایک باوثوق ذریعے نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ ہاشمی رفسنجانی کے دفتر نے کئی روز سے رفسنجانی کی اپنے بیٹے اور بیٹی سے ملاقات کے لیے حکومت سے بات چیت شروع کی تھی۔ ذرائع کےمطابق ہاشمی رفسنجانی کے بھائی محمد رفسنجانی نے اس ملاقات کے لیے جوڈیشل کونسل کے سربراہ آیت اللہ صادق لاری جانی آملی، اٹارنی جنرل حجۃ الاسلام غلام حسین آجئی اور دیگر حکام سے متعدد مرتبہ رابطہ کرکے اجازت مانگی تھی۔

اٹارنی جنرل اور جوڈیشل اتھارٹی کے سربراہ کی جانب سے اجازت ملنے کے بعد ہاشمی نے مقامی وقت کے مطابق شام سات بجے مہدی ہاشمی اور بیٹی فائزہ سے ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق ملاقات کے وقت جیل میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے تھے۔ یہ ملاقات تقریباً آدھ گھنٹہ جاری رہی۔



خیال رہے کہ سابق صدر کی صاحبزادے مہدی ہاشمی کو برطانیہ سے واپس بلائے جانے کے بعد جیل میں ڈالا گیا ہے جبکہ فائزہ کو بھی پچھلے ماہ ایک انقلاب عدالت کے حکم پر چھے ماہ کے لیے جیل میں ڈالا گیا تھا۔ فائزہ ایرانی مجلس شوریٰ کی سابق رکن ہیں۔ وہ ہاشمی خاندان کی ایک سرگرم خاتون سیاسی رہ نما ہیں۔