.

رفح میں مصری انٹیلی جنس کے دفتر میں زوردار دھماکے

فوج نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصر اور غزہ سرحد پر واقع رفح کے علاقے میں مصری انٹلیجنس کے ہیڈکواٹرز میں زوردار دھماکا ہوا ہے جس کے بعد فوج نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔

العربیہ ٹی وی کے نامہ نگار کے مطابق اتوار کو علی الصباح رفح سے ملحقہ الصفا کالونی میں مصری انٹلیجنس کے مقامی دفتر میں زوردار دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں، جس کے بعد فوج کی بھاری نفری کو جائے وقوعہ کی جانب جاتے دیکھا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق دھماکے سے انٹلیجنس دفتر کا ایک حصہ زمیں بوس ہو گیا تاہم اس میں کسی قسم کے جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

مصری سیکیورٹی ذرائع نے بتایا کہ دھماکے کی شدت سے آس پاس کی عمارتوں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔ حکام نے دفتر کو فوری طور پر خالی کرا کر اس کی مکمل تلاشی لی ہے۔ واقعے کے فوری بعد بارڈر فورسز کو ہائی الرٹ کر دیا گیا تھا۔ ابھی تک دھماکے کی وجوہات معلوم نہیں ہو سکی ہیں اور نہ ہی کسی عسکری گروپ نے اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

یاد رہے کہ رواں سال اگست میں رفح بارڈر سے ملحقہ سرحدی شہر العریش میں شدت پسندوں نے مصری فوجیوں پر حملہ کر کے سولہ اہلکار قتل کر دیئے تھے۔ اس کارروائی کے بعد مصری فوج نے جزیرہ نما سیناء میں چھپے عسکریت پسندوں کے خلاف طویل آپریشن کیا جس میں درجنوں شدت پسند ہلاک اور گرفتار کیے گئے تھے۔