.

الجزائری صدر سے چوتھی مرتبہ انتخاب لڑنے کے مطالبہ پر تنازعہ

رکن پارلیمان کا اخبارات میں اشتہار کے ذریعے مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
الجزائر کی پارلیمان کے ایک رکن نے صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ سے چوتھی مرتبہ صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اس مطالبے نے سیاسی اور سماجی حلقوں میں ایک نیا تنازعہ پیدا کر دیا ہے۔



العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق رکن پارلیمنٹ بہاء الدین طلیبہ کی جانب سے حال ہی میں اخبار 'الخبر' میں ایک اشتہار شائع کرایا گیا ہے۔اس میں صدر بوتفلیقہ سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ چوتھی مرتبہ صدارتی انتخابات میں حصہ لیں کیونکہ ملک و قوم کو ان کی اشد ضرورت ہے۔ اس مطالبے کے بعد سیاسی حلقوں اور سوشل میڈیا پر مسٹر طلیبہ کو سخت تنقید کا سامنا ہے۔



اسی اخبار نے ایک سابق صدارتی امیدوار علی بن فلیس کے حوالے سےایک مضمون بھی شائع کیا ہے جس میں فلیس کے مقرب ذرائع نے بتایا ہے کہ صدر عبدالعزیز بوتفلیقہ کی جانب سے آیندہ صدارتی انتخابات میں حصہ نہ لینے کی یقین دہانی کے بعد فلیس سنہ 2014ء کے صدارتی انتخابات میں دوبارہ میدان میں اترنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

تاہم منگل کو اخبار الخبر میں شائع بہاء الدین الطلیبہ کے اشتہار نے ایک نئی بحث چھیڑ دی ہے۔ ناقدین کا کہنا ہے کہ صدر بوتفلیقہ کے ’نورتن‘ ایک منظم اور طے شدہ منصوبے کے تحت ملک کومطلق العنانیت کی طرف لے جا رہے ہیں۔ تیسری کے بعد اب چوتھی مرتبہ صدر بوتفلیقہ کا صدارتی انتخابات میں حصہ لینے کا کوئی جواز نہیں رہا۔



خیال رہے کہ الجزائر میں 1996ء کے آئین کی رو سے کوئی شہری صرف دو مرتبہ صدر مملکت کے عہدے پر فائز ہو سکتا ہے لیکن سنہ 2008ء میں آئین میں ترمیم کر کے صدر کے تیسری مرتبہ انتخابات میں حصہ لینے کی راہ نکالی گئی تھی۔ اب صدر کے حامی بعض ارکان پارلیمان انہیں چوتھی مرتبہ بھی انتخابی دنگل میں اتارنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹس پر صدر کے حامی رکن پارلیمنٹ کے خلاف سخت الفاظ میں تنقید جاری ہے۔ مسٹر طلیبہ کے اخبار میں اشہتار کو آئین کو اور قانون کو یرغمال بنانے کی سازش کا الزام عائد کیا جا رہا ہے۔



ادھر الجیرین وزیر داخلہ دحو ولد قابلیہ نے اخبار 'الشروق' سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وہ پارلیمنٹ کےذریعے آئین میں آئندہ سال ایک نئی ترمیم لانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس آئینی ترمیم کا مقصد زیادہ سے زیادہ سیاسی جماعتوں کے انتخابات میں حصہ لینے کی راہ ہموار کرنا ہے۔