.

مصری سیاسی بحران کے خاتمے کے لیے سوڈانی سیاست دان کی ثالثی

صادق المہدی کی مرشد عام اور عمرو موسیٰ سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصر میں صدر محمد مرسی کی جانب سے نئے دستوری اعلامیے کے بعد پیدا ہونے والے سیاسی بحران کے حل میں مدد دینے کے لیے سوڈان کی مذہبی سیاسی جماعت 'اُمہ' کے سربراہ صادق المہدی نے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان صُلح کی کوششیں شروع کی ہیں۔ بزرگ سوڈانی سیاست دان بدھ کو قاہرہ پہنچے تھے جہاں انہوں نے مقتدر جماعت اخوان المسلمون کے مرشد عام ڈاکٹر محمد بدیع اور اپوزیشن رہ نما عمرو موسیٰ سے ملاقات کی۔



ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صادق المہدی نے بتایا کہ انہوں نے اخوان المسلمون کے مرشد عام ڈاکٹر بدیع سے ملاقات میں بحران کے حل کے لیے ایک نیا فارمولہ پیش کیا ہے۔ قبل ازیں انہوں نے سابق صدارتی امیدوار عمرو موسیٰ سے بھی ملاقات کی تھی اور سیاسی کشیدگی کے خاتمے کے لیے مختلف پہلوؤں پر غور کیا گیا۔ المہدی آج جمعرات کو قبطی عیسائیوں کے روحانی مذہبی پیشوا الانبا تواضروس، الدستور پارٹی کے سربراہ ڈاکٹر محمد البرادعی، سابق صدارتی امیدوار حمدین الصباحی اور صدر جمہوریہ ڈاکٹرمحمد مرسی سے بھی ملاقات کریں گے۔ ان ملاقاتوں میں بھی صادق المہدی بحران کے حل کے لیے اپنا وضع کردہ فارمولہ پیش کریں گے۔

صادق المہدی کے ثالثی فارمولے کی تفصیلات سامنے نہیں آئیں ہیں تاہم خود ان کا کہنا ہے کہ وہ اہم سیاسی رہ نماؤں سے ملاقاتوں کے بعد اپنا روڈ میپ منظر عام پر لائیں گے۔ خیال رہے کہ صادق المہدی ایک ایسے وقت میں قاہرہ میں ثالثی کی کوششیں کر رہے ہیں جب ان سے قبل لبنان، اردن اور کئی دوسرے اسلامی ملکوں کے سرکردہ رہ نما اسی مقصد کے لیے مصر کےدورے پر ہیں اور سیاسی رہ نماؤںسے ملاقاتیں کر رہے ہیں۔