.

ایران عریاں ویب سائٹ بنانے والے پروگرامر کی سزائے موت معطل

توبہ کے بعد سزا معطل کی گئی: ملزم کے وکیل کا دعوی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
ایرانی نژاد کینیڈین کمپیوٹر پروگرامر کو انٹرنیٹ پر فحش ویب سائٹ بنانے کے الزام میں سنائی گئی سزائے موت معطل کر دی گئی ہے۔

ملزم سعید مالکپور کے وکیل نے دعوی کیا ہے کہ سزائے موت معطلی کا فیصلہ ان کے مؤکل کی توبہ کے بعد کیا گیا ہے، تاہم ایرانی حکام کی جانب سے اس پر کسی قسم کا ردعمل دیکھنے میں نہیں آیا۔

انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم 'ایمنسٹی انٹرنیشنل' کے مطابق سعید مالکپور کو چار برس قبل ایران میں اپنے عزیز و اقارب سے ملاقات کے وقت گرفتار کیا تھا۔

ایرانی حکام نے مالکپور پر فحش ویب سائٹ بنانے کا الزام لگایا جبکہ ایمنسٹی کا کہنا ہے کہ سعید مالکپور نے ایک کمپیوٹر پروگرام ترتیب دیا تھا جسے کسی طرح اس کی اجازت اور علم کے بغیر ویب سائٹ کے سی ایم ایس میں استعمال کیا گیا، جس کے ذریعے ویب سائٹ پر فحش تصاویر اپ لوڈ کی جاتی رہیں۔

مالکپور کے وکیل محمود علی زادہ طبطبائی نے ایرانی خبر رساں ادارے 'مہر' کو بتایا کہ ان کے مؤکل نے سزائے موت سنائے جانے کے بعد توبہ کر لی تھی۔ سزائے موت انہیں ایک انقلابی عدالت نے سنائی تھی جس کی توثیق ایرانی سپریم کورٹ نے بھی کر دی تھی۔