.

امریکی کمپنی ڈیڑھ ارب ڈالر میں چاند کی سیر کرائے گی

خلائی ٹور ازم کمپنی ناسا کے سابق عہدیداروں نے بنائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
امریکی خلائی تحقیقاتی ایجنسی 'ناسا' کے ریٹائرڈ عہدیداروں نے چاند کی سیر کے لیے ایک خلائی ٹور ازم کمپنی تشکیل دی ہے۔ گولڈن اسپائک نامی کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ وہ چاند کی سیاحت کے متمنی لوگوں کے لیے خلائی سفر کا شیڈول جلد جاری کرے گی۔ بیان کے مطابق دو افراد کے زمین سے چاند کے دوطرفہ ٹرپ پر ڈیڑھ ارب ڈالر لاگت آئے گی۔

واضح رہے کہ گولڈن اسپائک چاند کی سیر و سیاحت کا انتظام کرانے والی اکلوتی کمپنی ہے۔ کمپنی چاند کی سیاحت کے علاوہ تحقیقاتی مشنز کا بھی اہتمام کرے گی۔ گولڈ اسپائک کا کہنا ہے کہ اس کا مقصد خلائی گاڑیوں کا مزید موثر استعمال ہے تاکہ پر اٹھنے والے اخراجات پورے کرنے کے علاوہ اسے ایک منافع بخش کاروبار بنایا جا سکے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ مستقبل میں خلائی سفر میں غیر معمولی تبدیلیاں رونما ہونے والی ہیں، جس کے لیے وہ آج ہی سے پیش بندی کر رہے ہیں۔ وہ اس سلسلے میں چاند پر تحقیقاتی مشن بھیجنے والے ملکوں، کمپنیوں اور انفرادی طور پر چاند کی سیر کرنے والے لوگوں کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں۔

چاند کی سیر کرانے کا انتظام کرنے والی پہلی فرم 'گولڈ اسپائک' کے بانیان کا تعلق امریکی خلائی تحقیقاتی ادارے ناسا سے رہا ہے۔ ان میں ناسا کے اسپیس سائنس کے سابق ڈپٹی ڈائریکٹر ایلن شٹران اور پولو مشن کے سابق ڈائریکٹر جیری گریون شامل ہیں۔