.

صدارتی محل کے سامنے صحافی کی ہلاکت کے ذمہ دار محمد مرسی ہیں

منگیتر کے قتل سے پہلے اخوان کی حامی اور اب جانی دشمن ہوں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مصر میں صدارتی محل کے سامنے گزشتہ ہفتے حکومت کے حامیوں اور مخالفین کے درمیان جھڑپوں کی کوریج کرنے والے صحافی الحسینی ابو ضیف کی ہلاکت کی ذمہ داری مرحوم کی منگیتر نے صدر محمد مرسی پر ڈال دی ہے۔

اپنے ویڈیو پیغام میں الحسینی نے کہا: "میں اپنے منگیتر کی ہلاکت سے پہلے اخوان المسلمون کی حامی تھی لیکن الحسینی کو سر میں گولی مار کر ہلاک کرنے والوں کو معلوم ہونا چاہئے کہ میں آج سے ان کی جانی دشمن ہوں۔" "میں الحسینی کی موت کا بدلہ لوں گی۔ الحسینی کے بعد میں دوسری شہیدہ ہوں گی۔"

یاد رہے کہ صحافی الحسینی گزشتہ بدھ کی صبح القصر العینی ہسپتال میں سر پر گولی سے لگنے والے زخم کی تاب نہ لا کر جان بحق ہو گئے تھے۔ وہ ایک ہفتہ قبل صدارتی محل کے سامنے مظاہرین اور صدر کے حامیوں کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں سر میں گولی لگنے سے زخمی ہوئے تھے۔

تیتئس سالہ الحسینی عوامی انقلابی تحریک کے دوسرے شہید صحافی ہیں۔ اس سے قبل الاہرام کے احمد محمود قاہرہ میں اپنے گھر کے ٹیرس میں کھڑے تھے کہ ایک اندھی بلٹ کا نشانہ بنے۔