.

نیو ٹاؤن ہلاکتوں پر امریکا میں سوگ، قومی پرچم سرنگوں

گن کلچر کی روک تھام پر امریکی قوم منقسم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
امریکا کے ایک پرائمری اسکول میں فائرنگ کے واقعے پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے پُر نم امریکی صدر براک اوباما نے تشدد کے ایسے واقعات کی روک تھام کے لیے معنی خیز عمل کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

امریکی ریاست کنیکٹی کٹ میں نیو ٹاؤن کے سنڈی ہُک ایلیمنٹری اسکول میں جمعہ کو پیش آنے والے اس واقعے میں بیس بچوں سمیت کل چھبیس افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی گئی ہے۔ اس خونریز واقعے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے براک اوباما نے نشریاتی تقریر میں کم و بیش وہی کچھ کہا جو انہوں نے اس المناک واقعے کے چند گھنٹوں بعد اپنے ایک نشریاتی پیغام میں کہا تھا۔ اوباما نے کہا تھا، ’ہمارے دل ٹوٹ گئے ہیں۔‘ اس دوران امریکی صدر نے متعدد بار اپنی آنکھوں سے بہتے ہوئے آنسوؤں کو صاف بھی کیا۔

براک اوباما نے کہا کہ امریکی عوام حالیہ برسوں کے دوران پہلے بھی ایسے المناک واقعے دیکھ چکے ہیں اور تشدد کے ایسے واقعات سے نمٹنے کے لیے اب معنی خیز اقدامات لینے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے پرتشدد اور المناک واقعات کی روک تھام کے لیے سیاست کو بالائے طاق رکھتے ہوئے متحد ہو کر کام کرنا ہو گا۔

امریکا میں فروغ پاتا ہوا ’گن کلچر‘ سیاسی طور پر نازک موضوع تصور کیا جاتا ہے۔ امریکا میں ماضی میں بھی فائرنگ کے ایسے متعدد واقعات رونما ہو چکے ہیں۔ دوسری مرتبہ صدارت کے عہدے پر متمکن ہونے سے قبل ایسے ہی واقعات پر تبصرہ کرتے ہوئے اوباما نے کہا تھا کہ گنوں کی وجہ سے پیدا ہونے والے تشدد کی روک تھام کے لیے قومی سطح پر مکالمت کی ضرورت ہے۔ اُس وقت البتہ انہوں نے گن کنٹرول پر کھل کر کوئی بیان نہیں دیا تھا۔

اگرچہ جمعہ کے روز رونما ہونے والے اس تازہ واقعے کے بعد بھی امریکی صدر باراک اوباما نے گن کلچر پر سخت قانون سازی کے حوالے سے کوئی واضح بیان نہیں دیا ہے تاہم انہوں نے کہا ہے کہ اب اس موضوع پر بات کرنے کا وقت آ گیا ہے۔

امریکا میں گن کنٹرول پر میئرز کے اتحاد ’گن کنٹرول پالیسی‘ کے شریک چیئرپرسن اور نیو یارک کے میئر مائیکل بلومبرگ نے صدر اوباما پر زور دیا ہے کہ ممکنہ اپوزیشن کے باوجود انہیں گن کنٹرول پر قانون سازی کا سنجیدہ معاملہ اٹھانا چاہیے۔

جمعہ کو امریکا کے چھوٹے سے ٹاؤن کے اسکول میں فائرنگ کے واقعے کے بعد دو سو افراد نے واشنگٹن میں وائٹ ہاؤس کے باہر مظاہرہ بھی کیا، جس میں انہوں نے گن کنٹرول پر سخت قانون سازی کا مطالبہ کیا۔

امریکا میں وائٹ ہاؤس سمیت تمام سرکاری عمارات پر قومی پرچم سرنگوں کر دیا گیا ہے اور اس واقعے میں ہلاک ہونے والوں کے لیے یادگاری تقریبات کا سلسلہ شروع ہو گیا۔ اسی طرح متعدد یورپی ممالک کے ساتھ ساتھ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بان کی مون نے بھی امریکا کے پرائمری اسکول میں فائرنگ کے واقعے پر سخت دکھ کا اظہار کیا ہے۔