.

تیونس سابق صدر بن علی کی متروکہ جائیداد نیلامی کے لئے پیش

نیلامی کا افتتاح وزیر اعظم حمادی الجبالی نے کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
تیونس کی وزارتِ خزانہ نے سابق معزول اور مفرور صدر زين العابدين بن علی اور انکے خاندان کی متروکہ املاک کو عوامی نیلامی کے لئے پیش کر دیا ہے۔

العربیہ ٹی وی کے مطابق عوامی نیلامی کا افتتاح نیلامی وزیرِ اعظم حمادی الجبالی نے کیا۔ نیلامی ایک ماہ تک جاری رہے گی اور اس میں سابق حکمران خاندان کی متروکہ دس ہزار سے زیادہ چیزیں نیلامی کے لیے پیش کی جائیں گی۔

نیلام کے لئے پیش کردہ چیزوں میں پر تعیش گھریلو فرنیچر، پینٹگز، قیمتی کاریں، الیکٹرونک اشیاء اور اس کے ساتھ خاتونِ اول کے ہوشربا زیوات کی نہ ختم ہونے والی فہرست شامل ہے۔

نیلامی میں خریداری کے خواہشمند افراد کی بڑی تعداد شریک ہے، جن کا تعلق دنیا کے مختلف ملکوں سے ہے۔ آکشن میں شمولیت کے لئے بیس ڈالر مالیت کا ٹکٹ رکھا گیا ہے۔ یا رہے نیلامی میں پیش کی جانے والی اشیاء بن علی محل سيدی الظريف محل سمیت دوسرے محلات سے جمع کی گئی تھیں۔

نیلامی سے 30 ملین ڈالر کی آمدنی متوقع ہے۔ گزشتہ نیلامی سے 478 ملین ڈالر مالیت کی آمدنی ہوئی تھی جسے حکام کے مطابق ملک کی گرتی ہوئی معیشت کو سہارا دینے کے لئے استعمال کیا جائے گا۔

سن 1987ء سے بر سر اقتدار صدر بن علی عوامی احتجاج کے بعد 14 جنوری 2011ء کو اپنے خاندان سمیت سعودی عرب فرار ہو گئے تھے۔ بن علی کو شہریوں کے خلاف جرائم کی وجہ سے عمر قید کی سزا سنائی جا چکی ہے۔