.

عدالت کی اجازت کے بغیر غیر ملکیوں کی جاسوسی کا قانون منظور

براک اوباما نے دستخط کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
امریکی صدر براک اوباما نے ملک میں سکونت پذیر غیر ملکیوں کی جاسوسی کے قانون کی منظوری دی ہے۔ قانون کی منظوری کے بعد عدالت کی اجازت کے بغیر کسی بھی غیر ملکی کی نگرانی کی جا سکے گی۔

امریکی وائٹ ہاؤس سے جاری کردہ بیان کے مطابق کانگریس نے بھاری اکثریت [23 کے مقابلے میں 73] سے قانون کی مدت میں توسیع کی ہے۔ سینٹ پہلے ہی اس قانون کی منظوری دے چکا ہے۔

قانون کے تحت ٹیلفونک گفتگو، ای میلز اور دوسرے مواصلاتی ذرائع سے ہونے والے رابطوں کی بھی نگرانی کی جا سکے گی۔

امریکا میں سن 2011 کے حملوں کے بعد پہلی مرتبہ منظور کئے جانے والے اس قانون کے تحت ان امریکیوں کے بارے میں انٹلیجنس معلومات جمع کی جا سکیں گی جو سیکیورٹی ایجنسیز کی بلیک لسٹ میں شامل ممکنہ غیر ملکی دہشت گردوں سے کسی قسم کا میل جول رکھیں گے۔