.

اسلام میں فسادی لوگوں کی تشہیر حرام ہے سعودی مفتی اعظم

'فسادی عناصر کی بیخ کنی عوام میں بیداری کے ذریعے ممکن ہے'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
سعودی عرب کے مفتی اعظم اور سپریم علماء کونسل کے صدر الشیخ عبدالعزیز آل الشیخ کا کہنا ہے کہ فسادی لوگوں کی تشہیر کرنا حرام ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق فسادی شخص کا محاسبہ کیا جانا چاہئے۔ لوگوں کو فساد سے خبردار کرنے کے اس کے دنیاوی اور اخروی نتائج و عواقب کی تشہیر کر کے معاشرے سے فساد اور اس کے پھیلانے والوں کی حوصلہ شکنی کی جا سکتی ہے۔

آل الشیخ نے ان خیالات کا اظہار سعودی عرب دمام کی یونیورسٹی میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا آج کل سیٹلائٹ ٹی وی چینلز پر خوابوں کی تعیبر بتانے والوں کی بھرمار ہے۔ انہوں نے میڈیا پر بعض علماء کی بکثرت آمد پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بعض ٹی وی چینلز نے فتاوی جاری کرنے والے ایسے پروگرام شروع کر رکھے ہیں کہ جنہیں پیش کرنے والے اصدار فتوی کا علم نہیں رکھتے۔

انہوں نے معاشرے میں عبث پھیلانے والوں کو خبردار کیا کہ وہ اللہ سے ڈریں۔ دین، اخلاق اور دوسروں سے حسن سلوک کرتے ہوئے اللہ کی جانب سے حرام قرار دی جانے والی چیزوں سے بچیں۔

انہوں نے کہا کہ معاشرے کو تمام باطل، متشبہ دعوے اور آراء سے نجات دلائی جائے۔ مفتی اعظم کا کہنا تھا کہ جماعتی اور فرقہ وارایت کا خاتمہ پرامن معاشرے کی پہلی شرط ہے۔