.

ہلمند میں باوردی افغان کے حملے میں برطانوی فوجی ہلاک

برطانوی فوجیوں کی فائرنگ سے حملہ آور مارا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
افغانستان کے جنوبی صوبہ ہلمند میں افغان فوج کی وردی میں ملبوس ایک شخص نے فائرنگ کرکے ایک برطانوی فوجی کو ہلاک کردیا ہے۔

نیٹو کے تحت انٹرنیشنل سکیورٹی اسسٹنس فورس (ایساف) نے منگل کو ایک بیان میں اپنے ایک فوجی کی ہلاکت کی تصدیق کی ہے اور بتایا ہے کہ اس کو افغان نیشنل آرمی کی وردی میں ملبوس حملہ آور نے ہلاک کیا ہے۔

ایساف کے ترجمان میجر مارٹن کریگٹن نے ایک بیان میں بتایا کہ واقعہ شورش زدہ صوبہ ہلمند کے ضلع نہر سراج میں ایک فوجی اڈے پر پیش آیا جہاں حملہ آور نے پہلے افغان فوجیوں پر فائرنگ کی تھی اور ا س کے بعد اس نے انجنیئیرنگ رجمنٹ میں شامل ایک برطانوی فوجی کو فائرنگ کر کے ہلاک کردیا۔برطانوی فوجیوں نے حملہ آور کو بھی موقع پر ہی گولی مار ہلاک کردیا ہے۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ واقعہ کی تحقیقات شروع کردی گئی ہے۔تاہم فوری طور پر واقعہ کی وجوہ سامنے نہیں آئی ہیں۔واضح رہےکہ ماضی میں طالبان مزاحمت کار اس طرح کے حملوں کی ذمے داری قبول کرتے رہے ہیں اور 2012ءمیں افغان سکیورٹی فورسز کی وردی میں ملبوس اہلکاروں کے حملوں میں تریسٹھ غیرملکی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔

بالعموم ایسے واقعات افغان سکیورٹی اہلکاروں اور امریکا کی قیادت میں نیٹو فوجیوں کے درمیان معمولی تلخ کلامی کے نتیجے میں رونما ہوئے تھے۔بعض اطلاعات کے مطابق افغان اہلکار غیر ملکیوں کےہاتھوں اپنی توہین کے بعد ان کو فائرنگ کا نشانہ بناتے رہے ہیں اور تشدد کے اس طرح کے واقعات کی وجہ سے افغانستان اور امریکا کے درمیان تعلقات میں بھی تلخی آئی ہے۔