.

پوسٹ اسد سیناریو پر تبادلہ خیال کے لئے برطانیہ میں اجلاس

شام سے متعلق ماہرین شرکت کریں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
برطانیہ شامی صدر بشار الاسد کے اقتدار خاتمے کے بعد کی صورتحال پر تبادلہ خیال اور لائحہ عمل تربیت دینے کی غرض سے لندن میں بین الاقوامی اجلاس کی میزبانی کر رہا ہے۔ اجلاس بدھ اور جمعرات کو لندن میں ہو گا۔ اجلاس میں شامی امور کے ماہر، لڑائی کے بعد استحکام کو یقینی بنانے والے دانشور اور شامی نیشنل الائنس میں شامل جماعتیں اور دیگر ایجنسیاں شرکت کریں گی۔

برطانوی وزیر خارجہ ولیم ہیگ نے دعوی کیا کہ بشار الاسد کا جانا اب ٹہر چکا ہے۔ اس لئے بین الاقوامی برادری کو ان کے بعد کے شام سے متعلق اپنی منصوبہ بندی تیار رکھنی چاہئے۔

ولیم ہیگ اور دوسرے مغربی ملکوں نے بشار الاسد کے دو روز قبل خطاب کو مسترد کر دیا ہے۔ صدر اسد نے اپنے اتوار کے روز کئے جانے والے خطاب کو امن منصوبہ کا نقشہ راہ قرار دیتے ہوئے سیاسی مخالفین سے مذاکرات کے امکان کو یکسر مسترد کر دیا تھا۔ دوسری جانب بشار الاسد کے خلاف مسلح جدوجہد میں مصروف اپوزیشن نے ان کی تقریر کو نیا اعلان جنگ قرار دیا تھا۔

اقوام متحدہ نے گزشتہ ہفتے ایک رپورٹ میں انکشاف کیا تھا کہ مارچ 2011ء سے جاری عوامی تحریک کے دوران ابتک ساٹھ ہزار شامی مارے جا چکے ہیں۔ اجلاس میں شامی اپوزیشن نیشنل الائنس کے سربراہ معاذ الخطیب شرکت نہیں کریں گے اور نہ ہی میڈیا کو اس کی کوریج کی اجازت ہو گی۔ اجلاس کے خاتمے پر کئے جانے والے فیصلوں پر مبنی اعلامیہ جاری کیا جائے گا۔