.

العربیہ نے سب سے بڑے سوشل میڈیا برانڈ کا اعزاز جیت لیا

دی سوشل کلینک 2012ء کی رپورٹ جاری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مشرق وسطیٰ میں سوشل میڈیا لسٹ میں پہلی پوزیشن کے بعد العربیہ نیوز چینل سعودی عرب میں ٹاپ سوشل میڈیا برانڈ ٹرافی جیتنے میں کامیاب ہو گیا ہے۔ جدہ میں قائم سوشل میڈیا کنسلٹلسی 'دی سوشل کلینک' کی ایک رپورٹ کے مطابق العربیہ نیوز چینل سعودی عرب میں ٹاپ سوشل میڈیا برانڈ تسلیم کر لیا گیا ہے۔

سن 2012ء میں سعودی عرب سوشل میڈیا رپورٹ کے مطابق العربیہ ٹویٹر پر 1٫62 ملین فولورز کے ساتھ پہلے نمبر پر آیا۔ دوسری نمبر پر العربیہ کی مادر کمپنی MBC نیٹ ورک کا ایک اہم شو تھا جس کے ساڑھے چار لاکھ فولورز ہیں۔ یہ شو معروف صحافی اور العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مدیر اعلی داؤد الشریان پیش کرتے ہیں۔ سعودی ٹیلی کام کمپنی STC 370000 فولورز کے ساتھ تیسرے نمبر پر رہی۔

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں 30 لاکھ لوگ ٹویٹر استعمال کرتے ہیں جو مشرق وسطیٰ کے کسی بھی ملک میں ٹیوٹر استعمال کرنے والوں کی سب سے زیادہ تعداد ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس تعداد میں ہر سال 300 فیصد کا اضافہ دیکھا جاتا ہے۔ اس رپورٹ میں سعودی کی تاریخ میں پہلی دفعہ فیس بک، ٹویٹر، یوٹیوب اور لنکڈان کے سوشل میڈیا کے اعداد وشمار شامل کئے گئے ہیں۔



سال 2011 اور 2012 کے درمیان سعودی عرب میں ٹیوٹر کے استعمال کرنے والوں کی تعداد میں 3000 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ سعودی عرب سے ہر مہینہ 5 کروڑ ٹویٹس کی جاتی ہیں جن میں سے اکثرعربی زبان میں ہوتی ہیں۔

دی سوشل کلینک کی ویب سائٹ پر جاری بیان کے مطابق "سعودی عرب دنیا کی عربی میں کی جانے والی ٹویٹس کا 30 فیصد حصے دار ہے، جس کی وجہ سے عربی ٹویٹر پر سب سے زیادہ تیزی سے پھیلنے والی زبان بن چکی ہے۔"

رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کا دارالحکومت ریاض دنیا کے ان 10 بڑے شہروں میں شامل ہے جہاں سب سے زیادہ ٹویٹس کی جاتی ہے اور 20 بڑے شہروں میں واحد عرب شہر ہے۔ سوشل کلینک کے مطابق سعودی عرب دوسرے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز میں سے فیس بک کے 60 لاکھ ایکٹو فیس بک صارفین ہیں جو کہ خلیج تعاون تنظیم کے رکن ممالک میں سب سے زیادہ ہیں۔