ہیلری کلنٹن کی الوداعی بیان میں ماسکو اور تہران کو دھمکی

ایران پر شام میں اسلحہ اور تربیت یافتہ جنگجو بھجوانے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکی وزیر خارجہ ہلیری کلنٹن نے اپنے عہدے کی مدت مکمل کرنے پر ایران اور روس کو خبردار کیا ہے کہ وہ بشار الاسد حکومت کی فوجی اور مالی امداد کرنے سے باز رہیں۔

انہوں نے تہران پر الزام لگایا کہ وہ دمشق کی بہت زیادہ حمایت کر رہا ہے۔ مسسز کلنٹن نے تہران اور ماسکو بشار الاسد کے لئے اپنی حمایت پر نظر ثانی کریں کیونکہ ایسا نہ کرنے پر شام کے اندر جاری لڑائی خطے میں پھیل سکتی ہے۔

اپنے الوداعی بیان میں ہیلری کلنٹن نے کہا کہ حال ہی میں ایران نے بشار الاسد کی مدد کے لئے تربیت یافتہ افراد اور جدید اسلحہ بھجوایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ روس نے بشار الاسد کی ایوان اقتدار سے رخصتی کے بارے میں اپنے موقف کو جوں کا توں برقرار رکھتے ہوئے دمشق کی حمایت جاری رکھی ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکا کو اپنی خارجہ پالیسی تشکیل دینے میں تاحال بڑے چینلجز کا سامنا ہے۔
اخبار نویسوں کے ایک گروپ سے بات کرتے ہوئے ہلیری کلنٹن نے کہا کہ ایران، بشار الاسد کے اقتدار کی بقا کو اپنی پہلی ترجیح قرار دیتا ہے۔ اپنی اس کمٹمنٹ کو پورا کرتے ہوئے ایران نے اپنے تربیت یافتہ افراد اور جدید اسلحے کی کھیپ شام بھیجی ہے۔

ہیلری کلنٹن، جمعہ کے روز امریکی وزیر خارجہ کے عہدے کا چارج نئے وزیر خارجہ جان کیری کے حوالے کر رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں