آئیوری کوسٹ کے ساحلی علاقے میں فرانسیسی آئیل ٹینکر اغوا

نائیجیرین قزاقوں پرتیل بردار جہاز ہائی جیک کرنے کا شُبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بین الاقوامی میری ٹائم بیورو (آئی ایم بی) کا کہنا ہے کہ آئیوری کوسٹ کے ساحلی علاقے میں لاپتا ہونے والے تیل بردار بحری جہاز کو نائیجیریا کے قزاقوں نے ہائی جیک کر لیا ہے۔

ملائشیا کے دارالحکومت کوالالمپور میں قائم آئی ایم بی کے قزاقی رپورٹس ڈویژن کے سربراہ نوئیل چونگ نے بتایا ہے کہ ''تیل بردار جہاز کے مالک کا تین فروری کو اس سے رابطہ منقطع ہو گیا تھا اور اس پر عملے کے سترہ ارکان سوار ہیں''۔

ان کا کہنا تھا کہ ''لاپتا ٹینکر کے بارے میں شُبہ ہے کہ اسے قزاقوں نے ہائی جیک کر لیا ہے اور وہ اسے آئیوری کوسٹ کے ساحل کی جانب لے جا رہے ہیں کیونکہ نائیجیریا اور بینن نے خلیج گنی میں بحری گشت میں اضافہ کر دیا ہے''۔

انھوں نے علاقے میں قزاقی کے حالیہ واقعات پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ سوموار ہی کو نائیجیریا کی بندر گاہ لاگوس پر متحدہ عرب امارات کے ملکیتی کیمیکل ٹینکر کو اغوا کرنے کے لیے قزاقوں کی کوشش کو ناکام بنا دیا گیا۔ان کی فائرنگ سے عملے کا ایک رکن زخمی ہو گیا اور اسے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

31جنوری کو نائیجیریا کے ساحلی علاقے میں جدید ہتھیاروں سے مسلح پچیس قزاقوں نے ایک بحری جہاز پر حملہ کر دیا تھا لیکن ان کی فائرنگ سے جہازکے عرشے کو نقصان پہنچنے کے باوجود کپتان اسے بھگا لے جانے میں کامیاب ہو گیا تھا۔

واضح رہے کہ نائیجیریا کے ساحلی علاقوں میں سال 2012ء کے دوران مسلح قزاقوں نے تیل بردار اور مال بردار بحری جہازوں پر باسٹھ حملے کیے تھے۔ انھوں نے بعض بحری جہازوں کو ہائی جیک کر لیا تھا اور بعض یرغمالیوں کو تاوان نہ ملنے پر قتل کردیا گیا تھا۔اس علاقے میں قزاق بالعموم تیل بردار جہازوں کو نشانہ بناتے ہیں اور وہ تاوان کے بجائے ان پر لدے تیل کو دوسرے جہازوں پر منتقل کرکے اسے بلیک مارکیٹ میں مہنگے داموں فروخت کرتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں