.

مغرب قدغنوں کے لیے جوہری ایشو کو استعمال کر رہا ہے: خامنہ ای

ایران کو جوہری مراعات نہ دینے پر مغرب کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے مغرب کوگذشتہ ہفتے جوہری مذاکرات کے دوران رعایتوں کی پیش کش نہ کرنے پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور کہا ہے کہ مغرب ایران پر پابندیوں کے لیے جوہری ایشو کو استعمال کر رہا ہے۔

خامنہ ای نے جمعرات کو ایک تقریر میں کہا کہ ''مغربی قوموں نے ایسا کوئی اقدام نہیں کیا جس کو کسی رعایت سے تعبیر کیا جاسکے اور اس کے بجائے انھوں نے ایران کے ایک حد تک حق کو تسلیم کیا ہے''۔

انھوں نے کہا کہ ''مغرب ایران کے جوہری پروگرام کو اس پر پابندیاں عاید کرنے کے لیے ایک جواز کے طور پراور ایرانیوں پر دباؤ کے لیے استعمال کررہا ہے تاکہ انھیں نظام کے خلاف محاذآرا کیا جا سکے''۔

آیت اللہ علی خامنہ ای کا قازقستان کے دارالحکومت المآتے میں ایران اور چھے بڑی طاقتوں کے درمیان جوہری تنازعے پر بات چیت کے بعد یہ پہلا ردعمل ہے۔ان کی یہ تقریر ان کی ویب سائٹ پر جاری کی گئی ہے۔انھوں نے کہا کہ ہمیں اہل مغرب کی نیک نیتی کے جائزے کے لیے مذاکرات کے آیندہ دور تک انتظار کرنا ہوگا۔

گذشتہ بدھ کو الماتے میں مذاکرات کے بعد ایران کے جوہری مذاکرات کار سعید جلیلی نے کہا تھا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے پانچ مستقل رکن ممالک اور جرمنی نے ہمارے نقطہ نظر کے قریب آنے کی کوشش کی ہے۔انھیں نے اس رائے کا اظہار کیا کہ یہ مذاکرات تبدیلی کا نقطہ آغاز ہو سکتے ہیں۔

مغربی عہدے داروں نے بتایا کہ چھے بڑی طاقتوں نے مذاکرات میں ایران کو سونے اور دیگر قیمتی دھاتوں کی تجارت پر عاید پابندی میں نرمی اور پیٹرولیم مصنوعات کی برآمد پرعاید پابندی میں بھی رعایت دینے کی پیش کش کی تھی۔تاہم اس کی انھوں نے مزید تفصیل نہیں بتائی۔

اس کے بدلے میں ایک امریکی عہدے دار کے بہ قول ایران سے یہ تقاضا کیا گیا ہے کہ وہ دوسرے اقدامات کے علاوہ فردو کے مقام پر زیر زمین جوہری تنصیب میں یورینیم کو 20 فی صد تک افزودہ کرنے کا عمل روک دے۔

ایران کا موقف ہے کہ اس کا جوہری پروگرام پرامن مقاصد کے لیے ہے اور وہ تحقیقی مقاصد کے لیے یورینیم کو 20 فی صد تک افزودہ کررہا ہے جبکہ امریکا اور اس کے ہم نوا مغربی ممالک یہ کہتے چلے آرہے ہیں کہ ایران اپنے جوہری پروگرام کے ذریعے جوہری بم تیار کرنا چاہتا ہے اور 20 فی صد یا اس سے زیادہ مصفیٰ یورینیم کو جوہری بم کی تیاری میں ایندھن کے طور پراستعمال کیا جا سکتا ہے۔