.

مرسی کا دورہٴ بھارت، سات شعبوں میں معاہدوں پر دستخط

من موہن سنگھ سے ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری صدر ڈاکٹر محمد مرسی کے دورہ بھارت کے موقع پر دونوں ملکوں میں سائبر تحفظ، انفارمیشن ٹیکنالوجی، خدمات، الیکٹرونکس، مینوفیکچرنگ اور قابلِٕ تجدید توانائی سمیت سات اہم شعبوں میں معاہدے کیے گئے۔

محمد مرسی نے وزیر اعظم من موہن سنگھ سے تبادلہٴ خیال بھی کیا۔ دونوں راہنماؤں نے دفاع اور اقوام متحدہ جیسے عالمی ادارے میں تعاون تیز کرنے پر بھی رضامندی ظاہر کی۔ بتایا جاتا ہے کہ قاہرہ کی الازہر یونیورسٹی میں ’سینٹر فور ایکسی لینس اِن آئی ٹی‘ کے قیام پر بھی اتفاق ہوا۔

وزیر اعظم نے مصری صدر کے ساتھ ہونے والے مذاکرات کو نتیجہ خیز قرار دیا اور کہا کہ اُن کے دورے نے ہمیں باہمی رشتے کی تجدید اور اسے مختلف سطحوں پر تعاون تک لے جانے کا موقع فراہم کیا ہے۔ اُنھوں نے یہ بھی کہا کہ بھارت اور مصر کے مابین باہمی تعلقات کو وسیع کرنے کے شاندار امکانات موجود ہیں۔

بھارتی وزیر اعظم نےجمہوریت کے نئے دور کے لیے مصری عوام کی جراٴت اور قربانیوں کی ستائش کی اور کہا کہ ایسے وقت میں جب محمد مرسی جمہوریت کے لیے مضبوط اداروں کی تعمیر، سماجی انصاف اور مجموعی اقتصادی ترقی کی جانب کامیابی کے ساتھ اپنے ملک کو لے جارہے ہیں، بھارت نے اپنے تجربات سے فائدہ اٹھانے کی پیش کش کی ہے۔

مصری صدر نے وزیر اعظم کو ’شریف اور مہذب برادر‘ قرار دیا اور کہا کہ اُن کے دوورے سے یہ واضح ہوتا ہے کہ مصر بھارت کے ساتھ تعاون کرنے کے لیے مشتاق ہے۔

دونوں راہنماؤں نے علاقائی اور عالمی صورتِ حال پر بھی تبادلہٴ خیال کیا اور کہا کہ وہ خلیج ، وسطی ایشیا اورجنوبی افریقی خطے میں استحکام چاہتے ہیں۔

اِس سے قبل، ’راشپتی بھون‘ میں مصری صدر کا روایتی خیر مقدم کیا گیا اور اُنھیں ’گارڈ آف آنر‘ پیش کیا گیا۔