.

ابو زید کی ہلاکت کے بعد جنگجو تنظیم کے نئے سربراہ کا اعلان

جمیل عکاشہ صحارا میں القاعدہ کے نئے لیڈر مقرر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الجزائز سے تعلق رکھنے والے جمیل عکاشہ کو صحارا کے علاقے میں القاعدہ کی شاخ اسلامی مغرب میں القاعدہ کا نیا لیڈر مقرر کیا گیا ہے۔

الجزائر کے ٹی وی چینل النہر نے اتوار کو ان کے تقرر کی اطلاع دی ہے۔ان کے پیش رو عبدالحمید ابو زید چند روز قبل مالی میں چاڈ کی فوج کے حملے میں مارے گئے تھے۔جمیل عکاشہ یحییٰ ابوالاہمام کے نام سے بھی جانے جاتے ہیں۔انھوں نے شمالی مالی میں 2004ء میں'' اسلامی مغرب میں القاعدہ'' میں شمولیت اختیار کی تھی۔

سکیورٹی ذرائع کے مطابق وہ 2005ء میں پڑوسی ملک موریتانیہ میں فوجی بیرکوں پر حملے اور 2009ء میں امریکی امدادی کارکن کرسٹوفر لیگیٹ کے قتل کے واقعہ کے وقت بھی موجود تھے۔

چونتیس سالہ عکاشہ اسلامی مغرب میں القاعدہ کے لیڈر عبدالمالک دروکدال کے قریبی مصاحبین میں شمار ہوتے ہیں اور دونوں الجزائر کے دارالحکومت کے علاقے سے تعلق رکھتے ہیں۔

اس سکیورٹی ذریعے نے برطانوی خبررساں ادارے رائیٹرز کو بتایا کہ عکاشہ شمالی افریقہ کے خطے میں تنظیم کے لیڈر دروکدال کے دست راست ہیں۔ان دونوں نے شمال کے علاقے میں اکٹھے بارہ سال گزارے ہیں اور پھر عکاشہ نے جنوب کی تنظیم میں شمولیت اختیار کر لی تھی۔

اس ذریعے کا کہنا ہے کہ عکاشہ کی اب اولین ترجیح مالی میں القاعدہ کے دوبڑے لیڈروں ابو زید اور مختار بلمختار کی غیرملکی فوج کی کارروائیوں میں موت کے بعد القاعد کو ازسرنو منظم کرنا ہوگا۔

واضح رہے کہ فرانس نے مالی کے شمالی علاقے میں جنوری سے القاعدہ اور اس سے وابستہ اسلامی تنظیموں کے خلاف فوجی مہم جوئی شروع کررکھی ہے اور اسے بعض افریقی ممالک کی فوج کی مدد بھی حاصل ہے۔ فرانسیسی فوج نے مالی کے شمالی علاقے سے القاعدہ کے جنگجوؤں کو نکال باہر کیا ہے اور وہ اب مالی کے پہاڑی علاقوں میں فرانس کی قیادت میں غیرملکی فوج کے خلاف مزاحمتی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں۔