.

شامی قومی اتحاد کے سربراہ معاذ الخطیب اچانک مستعفی

شامی اپوزیشن نے اپنے قائد کا استعفٰی مسترد کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی حزب اختلاف کے قومی اتحاد کے سربراہ احمد معاذ الخطیب نے اچانک اپنے عہدے سے مستعفی ہونے کا اعلان کردیا ہے۔ ادھر شامی قومی اتحاد نے اپنے قائد احمد معاذ الخاطب کی جانب سے پیش کیے جانے والا استعفٰی چند ہی گھنٹوں میں مسترد کردیا ہے۔

احمد معاذ الخطیب نے اتوار کو اپنے فیس بُک صفحے پر جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ ''میں قومی اتحاد سے مستعفی ہورہا ہوں تاکہ میں آزادی کے ساتھ کام کرسکوں کیونکہ یہ کسی ادارے کے ساتھ وابستہ رہتے ہوئے نہیں کیا جاسکتا تھا''۔

انھوں نے کہا کہ ''میں نے عظیم شامی عوام اور اللہ سے وعدہ کیا تھا کہ اگر معاملات سرخ لکیر تک پہنچ گئے تو میں استعفیٰ دے دوں گا''۔انھوں نے کہا کہ گذشتہ دوسال کے دوران ایک ظالم رجیم ہمیں ذبح کرتا رہا ہے لیکن دنیا اس بے مثال قتل عام کو محض دیکھتی ہی رہی ہے۔

تاہم انھوں نے یہ نہیں لکھا کہ کونسی بات یا معاملہ ان کے فوری طور پر یوں اچانک عہدہ چھوڑنے کا محرک بنا ہے۔ان کے اس فیصلے سے چند روز قبل ہی شامی قومی اتحاد نے استنبول میں اپنے اجلاس میں غسان ہیتو کو عبوری وزیراعظم منتخب کیا تھا۔

معاذ الخطیب نے اپنی تحریر میں عالمی برادری سے سوال کیا کہ ''کیا شام کے ڈھانچے کی ہونے والی تباہ کاری ،ہزاروں افراد کی گرفتاریاں اور لاکھوں افراد کو اپنے گھربار چھوڑنے پر مجبور کیا جانا ناکافی تھا کہ لوگوں کو ان کے دفاع کی اجازت دینے کے لیے کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا''۔

اتحاد کے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جنرل اسمبلی اور نہ ہی صدارتی دفتر نے معاذ الخطیب کے استعفی کو منظور کیا ہے اور وہ ان سے اپنا صدارتی منصب واپس سنبھالنے کا مطالبہ کررہے ہیں۔

بیان میں کہا گیا کہ خطیب نے بہت نازک موڑ پر شامی قومی اتحاد کی قیادت کی ہے۔ انہوں نے اتحاد کو انتہائی مہارت سے آگے بڑھایا ہے اور ایسا کرتے ہوئے شامی عوام میں مقبولیت حاصل کی ہے۔

اس میں مزید کہا گیا کہ "جنرل اسمبلی کے کے اراکین کے درمیان معاہدے کے مطابق، خاطب اس موقع پر اتحاد کی باگ ڈور سنبھالنا جاری رکھیں گے"

شامی قومی اتحاد کے سربراہ نے ایسے وقت میں استعفیٰ دیا ہے جب عرب لیگ نے انھیں وزرائے خارجہ کے اجلاس میں شرکت کی دعوت دی تھی اور تنظیم میں شام کی نشست قومی اتحاد کو دینے پر غور کیا جانے والا تھا۔عرب لیگ نے چھے مارچ کو شامی قومی اتحاد کو شام کی نشست کے حصول کے لیے انتظامی باڈی تشکیل دینے کا کہا تھا اور آیندہ منگل چھبیس مارچ کو دوحہ میں ہونے والے اجلاس میں شرکت کی دعوت دی تھی۔