.

جیش الحر کے کمانڈر پر دیر الزور میں ناکام قاتلانہ حملہ

کرنل ریاض کا ترکی میں علاج کیا جا رہا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شامی اپوزیشن جماعتوں کے جنگجوؤں پر مشتمل جیش الحر کے کمانڈر ریاض الاسد ترک اور شام کے سرحدی علاقے دیر الزور میں پیر کو علی الصباح ایک کار بم دھماکے میں زخمی ہو گئے۔ جیش الحر کے ترجمان کے مطابق زخمی کمانڈر کو ترکی میں طبی امداد دی جا رہی ہے۔

جیش الحر کے سیاسی اور میڈیا کوارڈینیٹر لوی المقداد نے العربیہ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ شامی صدر بشار الاسد، جیش الحر کے کمانڈر ریاض الاسد کو ہلاک کر کے الرقہ اور دیر الزور کے علاقے کو سزا دینا چاہتے ہیں۔

العربیہ ٹی وی رپورٹ کے مطابق ریاض الاسد مشرقی شام میں دیر الزور کے علاقے میں ہونے والے بم دھماکے میں زخمی ہوئے۔ اس علاقے میں حالیہ مہینوں کے دوران باغی جنگجوؤں اور اسد نواز فوج کے درمیان شدید لڑائی ہوتی رہی ہے۔

لوی المقداد نے تصدیق کی ہے کہ جیش الحر کے کمانڈر کو اگرچہ گہرے زخم آئے ہیں تاہم ان کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ اس وقت انہیں شامی سرحد سے باہر ترکی کے ایک اہسپتال میں علاج معالجے کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسد نواز فوج جسے چاہے نشانہ بنائے یا جو مرضی تباہ کرے، حکومت کے خلاف عوامی انتفاضہ جاری رہے گی۔

اقوام متحدہ کے محتاط اندازے کے مطابق دو سال سے جاری عوامی انتفاضہ کے دوران ابتک شام میں جاری خانہ جنگی میں ستر ہزار افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔