.

امریکا کی نگرانی میں شامی باغیوں کے لیے اسلحے کی خریداری

سی آئی اے کی مدد سے شامی باغیوں کو اسلحے کی ترسیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی مرکزی انٹیلی جنس ایجنسی (سی آئی اے) نے حالیہ مہینوں کے دوران شامی باغیوں کے لیے ترکی اور بعض عرب ممالک کو اسلحہ مہیا کیا ہے۔

اس بات کا انکشاف امریکی اخبار نیویارک ٹائمز میں سوموار کو شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں کیا گیا ہے۔اس رپورٹ میں فضائی ٹریفک کے ڈیٹا ،بے نامی عہدے داروں کے انٹرویوز اور باغی کمانڈروں کے بیانات شامل کیے گئے ہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ فوجی سازوسامان اردن ،سعودی عرب اور قطر کے مال بردار طیاروں کے ذریعے بھیجا گیا ہے۔فوجی طرز کے مال بردار طیارے انقرہ کے نزدیک واقع آئزن بوگا ہوائی اڈے کے علاوہ ترکی کے دوسرے ہوائی اڈوں اور اردن میں اترتے رہے ہیں۔

اخبار نے لکھا ہے کہ سی آئی اے ایجنٹوں نے عرب ممالک کو اسلحہ کی خریداری میں مدد دی ہے اور کروشیا سے بھاری مقدار میں اسلحہ خرید کیا گیا ہے۔امریکی انٹیلی جنس افسروں نے باغی گروپوں اور ان کے سربراہوں کا تعین کیا تھا کہ ان میں سے کس کو اسلحہ دیا جانا چاہیے اور ترکی نے زیادہ تر اس پروگرام کی نگرانی کی ہے۔

اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹی ٹیوٹ (سیپری) کے ایک تجزیہ کار ہیو گریفتھس نے اخبار کو بتایا کہ ''ایک اندازے کے مطابق ساڑھے تین ہزار ٹن وزنی فوجی آلات بھیجے گَئے ہوں گے۔ان پروازوں کو بڑے منظم انداز اور خفیہ طریقے سے پہنچایا گیا ہے۔