مصر میں ایرانی سفارتکار کے گھر پر سلفیوں کا حملہ

مظاہرین نے مجتنی امانی کے گھر کے باہر جیش الحر کا پرچم لہرا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر میں ایرانی چارج ڈی آفیئر مجتبی امانی کی دارلحکومت قاہرہ کے علاقے نیو مصر میں واقع رہائش گاہ پر سلفی پارٹی سے وابستہ مٹھی بھر افراد نے حملہ کیا ہے۔

حملہ آور مجتبی امانی کی مصر سے بیدخلی اور ملک میں شیعہ ازم کے بڑھتے ہوئے نفوذ کو روکنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔ حملہ آور مظاہرین نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حرکت میں آنے سے پہلے مصر میں ایرانی چارج ڈی آفیئرز کے گھر کے سامنے شام کی جیش الحر کا پرچم بھی لہرایا۔

سینٹرل سیکیورٹی فورس نے مظاہرین سے جھڑپوں اور ایرانی سفارتکار کی رہائش گاہ پر پتھراؤ کے بعد سیکیورٹی حصار قائم کر دیا تاکہ مظاہرین اس پر دوبارہ حملہ آور نہ ہو سکیں۔ مظاہرین ایران اور شیعہ مذہب کے خلاف نعرے بازی کر رہے تھے، تاہم حملہ آوروں میں شامل بعض افراد شامی انقلاب اور جیش الحر کی حمایت میں بھی نعرے لگا رہے تھے۔

اپنی رہائشگاہ پر حملے کے بارے میں اپنا ردعمل بیان کرتے ہوئے ایرانی سفارتکار مجتبی امانی نے بتایا کہ وہ اپنے گھر پر حملے میں محفوظ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شامی حکومت مخالفین میرے گھر پر حملہ کرانے میں ملوث ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں