سوڈان:حکومت کے خلاف بغاوت پر 9 فوجی افسروں کو سزائیں

صدرعمرالبشیر کی معاونت کرنے والے بریگیڈئیر کو پانچ سال قید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سوڈان میں ایک فوجی عدالت نے گذشتہ سال صدر عمر حسن البشیر کی حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش میں ملوث نو فوجی افسروں کو مجرم قرار دے کر دو سے پانچ سال تک قید کی سزائیں سنائی ہیں۔

مدعاعلیہان کے ایک وکیل ہشیم الجالی نے بتایا ہے کہ ''فوجی عدالت نے نوفوجی افسروں کو حکومت کا تختہ الٹنے کی سازش کے الزام میں قصور وار قرار دیا ہے اور دسویں افسر کو عدم ثبوت کی بنا پر بری کردیا ہے۔ سزا پانے والے نو افسروں کو پہلے ہی فوج سے برخواست کیا جاچکا ہے۔

انھوں نے بتایا کہ صدر عمر حسن البشیر کے 1989ء میں کامیاب فوجی انقلاب اور اس وقت کی سول حکومت کا تختہ الٹنے کی مہم میں اہم کردار ادا کرنے والے بریگیڈئیر محمد ابراہیم کو سب سے زیادہ پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

ان میں سے بیشتر فوجی سابق رضا کار مجاہدین کے گروپ سے تعلق رکھتے ہیں۔انھوں نے 1983-2005ء کے دوران شمالی سوڈان کی فوج اور جنوبی سوڈان کے علاحدگی پسند باغیوں کے درمیان خانہ جنگی میں بھی حصہ لیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں