'خاتون آہن' مارگریٹ تھیچر 87 برس کی عمر انتقال کر گئیں

تھیچر شوہر کی وفات کے بعد سے شدید غمزدہ رہتی تھیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

برطانیہ کی سابق وزیراعظم مارگریٹ تھیچر المعروف 'آئرن لیڈی' 87 برس کی عمر میں انتقال کر گئی ہیں۔ ان کے ترجمان کے مطابق تھیچر کی انتقال اسٹروک کے باعث ہوا۔

مارگریٹ تھیچر کے ترجمان ٹموتھی بیل کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق، ’’انتہائی دکھ کے ساتھ مارک اور کارول تھیچر اعلان کرتے ہیں کہ ان کی والدہ بارونیس تھیچر اسٹروک کے بعد پیر کی صبح پُرسکون طریقے سے انتقال کر گئیں۔‘‘

آنجہانی 1979ء میں برطانیہ کی پہلی خاتون وزیراعظم کے طور پر منتخب ہوئیں۔ انہوں نے متواتر تین انتخابات میں کامیابی حاصل کی اور 1990ء میں اپنے عہدے سے استعفیٰ دیا۔ روس کے ساتھ سرد جنگ کے زمانے میں سابق قدامت پسند رہنما مارگریٹ تھیچر کو ’آئرن لیڈی‘ یعنی خاتون آہن کا نام دیا گیا تھا۔ انہوں نے اپنے دور حکومت میں ملک میں بڑے پیمانے پر پرائیویٹائزیشن کے علاوہ 1982ء میں فالکلینڈ جزائر کی واپسی کے لیے ارجنٹائن کے ساتھ جنگ بھی کی۔

مارگریٹ تھیچر کو 2002ء کے بعد سے کئی مرتبہ دل کے چھوٹے اسٹروک ہو چکے تھے۔ وہ 2003ء میں اپنے شوہر ڈینس کی وفات کے بعد سے شدید غمزدہ رہتی تھیں۔ ان کی صحت کے حوالے سے مختلف افواہیں بھی پھیلتی رہیں اور 2011ء میں ان کی زندگی پر بننے والے ایک فلم میں انہیں ڈیمنشیا کا مریض بھی قرار دیا گیا۔

برطانوی وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون مارگریٹ تھیچر کے انتقال کے بعد اپنا اسپین کا دورہ مختصر کرکے اور فرانس کا دورہ معطل کرکے وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔ اپنے ٹوئٹر پیغام میں کیمرون کا کہنا تھا، ’’ انتہائی دکھ کے ساتھ لیڈی تھیچر کے انتقال کی خبر سنی گئی۔ ہم نے ایک عظیم لیڈر، عظیم وزیراعظم اور ایک عظیم برطانوی شخصیت کو کھو دیا۔‘‘

مارگریٹ تھیچر کے بعد وزیراعظم کا عہدہ سنبھالنے والے کنزرویٹیو رہنما جان میجر نے سابق برطانوی وزیراعظم کے انتقال پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے انہیں ’قدرت کی اصل طاقت‘ اور ’سیاسی مظہر‘ قرار دیا ہے۔ جان میجر کے مطابق، ’’معاشی حوالے سے ان کی اصلاحات، ٹریڈ یونین کے قوانین اور فالکلینڈ جزائر کی واپسی کے حوالے سے ان کے اقدامات انہیں عام سیاستدانوں سے کہیں اوپر لے گئے۔‘‘

برطانوی ملکہ الزبتھ دوئم کی طرف سے بھی تھیچر کے انتقال پر دکھ کا اظہار کیا گیا ہے۔ یورپین کمیشن کے صدر یوزے مانویل باروسو کی طرف سے تھیچر کے انتقال کے حوالے سے کہا گیا ہے، ’’وہ اپنے اقدامات اور ہمارے مشترکہ پراجیکٹس میں اپنے کردار کے حوالے سے ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں