ایران: بوشہر ری ایکٹر کے علاقے میں طاقتور زلزلہ، 30 افراد ہلاک

1۔6 شدت کے زلزلے میں 650 سے زیادہ افراد کے زخمی ہونے کی اطلاع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران کے ساحلی شہر بوشہر میں اہم جوہری تنصیب کے علاقے میں طاقتور زلزلہ آیا ہے جس کے نتیجے میں تیس افراد ہلاک اور سیکڑوں زخمی ہو گئے ہیں۔ریختر سکیل پر زلزلے کی شدت 1۔6 تھی اور اس کے جھٹکے متحدہ عرب امارات ،قطر اور بحرین میں بھی محسوس کیے گئے ہیں۔

ایران کے سرکاری ٹی وی نے زلزلے کے نتیجے میں تیس افراد کی ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے لیکن ان سے متعلق مزید کوئی تفصیل نہیں بتائِی۔ زلزلے میں ساڑھے چھے سو زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔بوشہر کے ری ایکٹر کے نزدیک واقع دو دیہات میں ہزاروں افراد آباد ہیں۔ خلیجی عرب ریاستوں میں زلزلے سے ہلاکتوں کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔

ایرانی خبررساں ایجنسیوں نے فوری طور پر بوشہر سے قریباً نوے کلومیٹر دور واقع کاکی کے مقام میں جوہری پاور پلانٹ میں کسی قسم کے نقصان کی کوئی اطلاع نہیں دی۔روس کی سرکاری خبررساں ایجنسی آر آئی اے نے اطلاع دی ہے کہ زلزلے سے بوشہر کے جوہری ری ایکٹر میں معمول کے کام پر کوئی فرق نہیں پڑا اور وہاں عملے نے معمول کے مطابق اپنی سرگرمیاں جاری رکھی ہیں۔

ایران کے زلزلہ پیما مرکز کی اطلاع کے مطابق منگل کو سہ پہر چار بج کر بائیس منٹ پر زلزلہ آیا تھا اور اس کا مرکز بارہ کلومیٹر زیرزمین تھا۔امریکا کے جیالوجیکل سروے نے زلزلے کی شدت چھے اعشاریہ تین بتائی ہے۔

قطر کے دارالحکومت دوحہ اور بحرین کے دارالحکومت منامہ میں زلزلے اور پھر یکے بعد دیگر متعدد ہلکے جھٹکوں کے فوری بعد دفاتر کو خالی کرالیا گیا۔دبئی میں بھی زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے ہیں۔

ایران کے جوہری پاور پلانٹ کے نزدیک آنے والے اس زلزلے کی شدت جاپان میں دوسال پہلے آنے والے زلزلے کی شدت سے کم تھی۔جاپان میں نو اعشاریہ صفر کی شدت کے زلزلے میں اس کے فوکو شیما میں واقع جوہری پاور پلانٹ کا کولنگ سسٹم تباہ ہوگیا تھا اوراس کے نتیجے میں تین ری ایکٹر بھی حرارت پکڑنے کے بعد تباہ ہوگئے تھے۔

خلیجی ممالک اور مغربی ماہرین ایران کے بوشہر پاور پلانٹ کے بارے میں اپنی تشویش کا اظہار کرچکے ہیں کیونکہ یہ زلزلے والے علاقے میں واقع ہے لیکن ایران ان کے اعتراضات کو مسترد کرتا چلا آرہا ہے۔مغربی ممالک اور امریکا کا کہنا ہے کہ ایران بوشہر میں واقع پاور پلانٹ کے تحفظ کے لیے تمام عالمی تقاضے پورے کرے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں