.

امریکی ریاست ٹیکساس فیکٹری میں دھماکا، دسیوں ہلاک و زخمی

دھماکا کھاد بنانے والی فیکٹری میں ہوا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی ریاست ٹیکساس میں ایک فیکٹری میں دھماکے اور آگ کی وجہ سے متعدد افراد کے زخمی ہوئے ہیں۔ بہت سے لوگ فیکٹری کی عمارت میں پھنسے ہوئے ہیں جہاں آگ لگی ہوئی ہے۔

یہ واقعہ ٹیکساس میں واکو کے قریب کھاد کی فیکٹری میں مقامی وقت کے مطابق بدھ کو رات آٹھ بجے پیش آیا۔ ایمرجنسی حالات سے نمٹنے کے لیے آگ بجھانے کا عملہ، ایمبولنس اور ہیلی کاپٹرز روانہ کر دیے گئے ہیں۔

واکو ہیرالڈ ٹریبون کے مطابق فیکٹری میں دھماکہ اس وقت ہوا جب عملہ آگ بجھانے کی کوشش کر رہے تھا جس کی وجہ سے عملہ بھی زخمی ہوا۔

واکو میں ہل کرسٹ بابٹسٹ میڈیکل سنٹر کے سربراہ گلن روبنسن نے امریکی نشریاتی ادارے 'سی این این' کو بتایا کہ ان کے ہسپتال میں 66 زخمی لائے گئے جن میں 38 شدید زخمی ہیں۔

کاونٹی شیریف پارنیل میکنامارا نے کہا’یہ بہت بڑی تباہی ہے۔ میں نے پہلے کبھی ایسی تباہی نہیں دیکھی۔یہ سارا ملبہ جنگ زدہ علاقہ دکھائی دیتا ہے۔‘

ایک عینی شاہد ڈبی ماراک نے خبر رساں ادارے 'اے پی' ک بتایا کہ انہوں نے فیکٹری کی طرف دھواں نکلتے دیکھا اور مزید دیکھنے کے لیے باہر نکلی۔

انہوں نے کہا جب وہ وہاں پہنچی تو دو لڑکوں نے ان کی طرف دوڑتے ہوئے کہا کہ حکان نے انہیں یہاں سے جانے کو کہا ہے کیونکہ کھاد کی فیکٹری میں دھماکہ ہونے والا ہے۔

ان کہنا تھا کہ ’وہ دھماکے سے پہلے گاڑی میں توڑی ہی دور گئی تھیں۔ یہ ایک طوفان کی طرح تھا۔ ہر طرف چیزیں اْڑ رہی تھی۔یہ ایسا تھا جیسے ساری زمین ہل گئی ہو۔‘

ٹیکساس کے گورنر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ’ہم حالات کو دیکھ رہے ہیں اور واقعے کے متعلق معلومات اکٹھے کر رہے ہیں۔‘ انہوں نے کہا کہ ’ہم نے مقامی انتظامہ کی مدد کے لیے واسائل مہا کیے ہیں۔ ہم متاثرین کے لیے دعا گو ہیں۔‘