.

بوسٹن دھماکوں کے دو 'مشتبہ' ملزمان کی پہلی تصاویر اور ویڈیو جاری

ایف بی آئی کی سفید ٹوپی والے شخص کی شناخت میں مدد کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی نے بوسٹن دھماکوں کی تحقیقات کے سلسلے میں دو مشتبہ افراد کی تصاویر جاری کی ہیں۔

کلوز سرکٹ ٹی وی کیمرے کے ذریعے لی گئی تصاویر میں دو افراد کو دیکھا جا سکتا ہے۔ ان تصاویر میں ایک مشتبہ شخص نےگہرے رنگ کی جبکہ دوسرے نے سفید ٹوپی پہن رکھی ہے۔ ایف بی آئی ایجنٹ رچرڈ ڈے لاریئرز نے عوام کو متنبہ کیا ہے کہ وہ ان افراد کے قریب نہ جائیں۔

ایف بی آئی کی طرف سے جاری کی گئی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ دو مشتبہ افراد میراتھن ریس کے دوران لوگوں کے بیچ چل رہے ہیں۔ سفری بیگوں کے ہمراہ ان مشتبہ افراد کی فوٹیج بم حملوں سے قبل کی ہے۔

ان دونوں مشتبہ افراد کے بارے میں جاری کی گئی ویڈیو کا دورانیہ 30 سکینڈ ہے۔ ایڈیٹنگ کے ساتھ تیار کی گئی اس ویڈیو میں دونوں مشتبہ افراد ایک دوسرے کے ساتھ چلتے دیکھے جا سکتے ہیں۔ تین اینگلز کے ساتھ بنائی گئی یہ ویڈیو بظاہر سکیورٹی کیمرے کی فوٹیج معلوم ہوتی ہے۔ یہ ویڈیو مقامی وقت کے مطابق 2 بجکر 37 منٹ پر لی گئی تھی، جس کے ٹھیک 13 منٹ بعد دھماکے ہوئے تھے۔

بوسٹن ہوٹل میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے رچرڈ رچرڈ ڈے لاریئرز کا کہنا تھا کہ ہم ان دو مشتبہ افراد کو بہت خطرناک اور مسلح سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ویڈیو فوٹیج میں سفید ٹوپی پہنے مشتبہ شخص نے جائے وقوعہ کے قریب دوسرے دھماکے کے بعد فورم ریستوران کے سامنے اپنا بیگ رکھا۔

یاد رہے کہ پیر کو بوسٹن میں میراتھن دوڑ کی اختتامی لائن کے قریب ہونے والے دو دھماکوں میں 3 افراد ہلاک اور 170 سے زائد افراد زخمی ہو گئے تھے۔

اس سے پہلے بدھ کو تفتیش کاروں کا کہنا تھا کہ میراتھن دوڑ میں استعمال ہونے والے بم ممکنہ طور پر پریشر ککر میں نصب کیے گئے تھے۔

تفتیش کاروں نے امریکی میڈیا کو بتایا کہ جائے وقوعہ سے نائلون کے ٹکڑے، بال بیئرنگ اور کیلیں ملی ہیں جنھیں ’ممکنہ طور پر ایک پریشر ککر سے بنائے گئے آلے میں رکھا گیا تھا