.

اسلامی مغرب میں القاعدہ سے تعلق کے شُبے میں دو افراد گرفتار

الجزائری اورمراکشی شہری پر شمالی مالی میں عسکری تربیت لینے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسپین میں پولیس نے القاعدہ کے شمالی افریقہ میں برسرپیکار گروپ سے تعلق کے شبے میں دو افراد کو چھاپہ مار کارروائیوں کے دوران گرفتار کرلیا ہے۔

اسپین کی وزارت داخلہ نے منگل کو ایک بیان میں کہا ہے ان مشتبہ جنگجوؤں کا اسلامی مغرب میں القاعدہ سے تعلق ہے۔ان میں سے ایک شخص الجزائری ہے اور اس نے شمالی مالی میں جنگجوؤں کے ایک کیمپ میں تربیت حاصل کی تھی۔اس کو اسپین کے صوبے زراغوضہ سے گرفتار کیا گیا ہے۔دوسرا شخص مراکشی ہے اور اس کو جنوبی صوبے مرشیہ سے پکڑا گیا ہے۔

بیان کے مطابق ان دونوں افراد کی گرفتاری فرانس ،اسپین اور مراکش کی مشترکہ کارروائی کے نتیجے میں عمل میں آئی ہے۔تاہم بیان میں اس امر کی وضاحت نہیں کی گئی کہ گرفتار افراد دہشت گردی کی کسی سازش میں ملوث تھے یا انھیں حفظ ماتقدم کے طور پر ایسی کسی کارروائی سے پہلے ہی اٹھا لیا گیا ہے۔

اسپین کے دارالحکومت میڈرڈ میں آیندہ اتوار کو میراتھن منعقد کی جا رہی ہے اور اس موقع پر امریکی شہر بوسٹن میں بم حملوں کے بعد سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے جارہے ہیں۔بوسٹن میں میراتھن کے اختتام پر دو بم دھماکوں میں تین افراد ہلاک اور دو سو زخمی ہوگئے تھے۔تاہم ہسپانوی وزارت داخلہ کے ترجمان نے میراتھن کے موقع پردہشت گردی کے کسی خاص خطرے کے بارے میں کچھ کہنے سے گریز کیا ہے۔

اسپین میں القاعدہ کے دو جنگجوؤں کی گرفتاری کی اطلاع کینیڈا اور امریکا کے درمیان ریلوے لائن کو بم دھماکوں میں تباہ کرنے کی ناکام سازش پکڑ جانے کے ایک روز بعد منظرعام پر آئی ہے۔امریکا کے ایک سکیورٹی عہدے دار کا کہنا ہے کہ ریلوے لائن کو بم سے تباہ کرنے کی سازش کا گذشتہ ہفتے بوسٹن میں بم دھماکوں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

یادرہے کہ کچھ عرصہ قبل اسپین کے وسطی صوبے سیوڈاڈ رئیل میں فرانس کی سرحد کے نزدیک واقع جنوب مغربی بندرگاہ کاڈیز سے بھی القاعدہ کے تین مشتبہ جنگجوؤں کو گرفتار کیا گیا تھا۔ان پر الزام عاید کیا گیا تھا کہ وہ اسپین یا یورپ بھر میں کہیں بھی حملوں کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔

ان تینوں کے خلاف تحقیقات کے لیے اسپین کی اعلیٰ فوجداری عدالت کے ایک جج کو مقرر کیا گیا تھا۔اس سے قبل بھی اسپین میں حالیہ مہینوں کے دوران متعدد اسلامی سخت گیروں کو گرفتارکیا جاچکا ہے اور اب ان کے خلاف عدالتوں میں مقدمات چلائے جارہے ہیں۔