.

بشارالاسد حکومت نے کیمیائی ہتھیار استعمال کیے ہیں: امریکا

شامی فوج نے باغیوں کے خلاف 'سرن' گیس کا استعمال کیا ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی وزیر دفاع چک ہیگل نے کہا ہے کہ امریکی خفیہ اداروں کو ایسے شواہد ملے ہیں، جن سے معلوم ہوتا ہے کہ شائد شامی حکومت نے کیمیکل ہتھیار استعمال کیے ہیں۔

امریکی وزیر دفاع چک ہیگل نے کہا کہ امریکی خفیہ اداروں کو شبہ ہے کہ شامی صدر بشار الاسد کی حکومت نے باغیوں کے خلاف چھوٹے پیمانے پر سرن گیس کا استعمال کیا ہے۔ انہوں نے کہا، ’’ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران ہونے والی پیشرفت کے بعد اس نتیجے پر پہنچا گیا ہے۔‘‘

امریکی وزیر دفاع نے مزید کہا کہ اگرچہ اس بارے میں یقین سے کچھ نہیں کہا جا سکتا کہ ایسے ہتھیار کب استعمال کیے گئے لیکن شام میں کیمیائی ہتھیاروں کا اگر کوئی استعمال ہوا ہے تو وہ اسد حکومت کی طرف سے کیا گیا ہے۔ یہ امر اہم ہے کہ صدر بشار الاسد باغیوں پر الزام عائد کرتے ہیں کہ وہ کیمیائی ہتھیار استمعال کر چکے ہیں جبکہ باغی حکومت پر ایسے ہی الزامات دھرتے ہیں۔ تاہم آزادانہ ذرائع سے ان دعوؤں کی تصدیق ابھی تک ممکن نہیں ہو سکی ہے۔

ادھر واشنگٹن میں امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے صحافیوں کو بتایا ہے کہ شام میں کیمیائی ہتھیار استعمال کیے جانے کے دو واقعات نوٹ کیے گئے ہیں۔ تاہم اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے ترجمان پیٹرک وینٹرل سے جب ان واقعات کے بارے میں تفصیل جاننے کی کوشش کی گئی تو انہوں نے اس پر کوئی تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔

اسرائیل، فرانس اور برطانیہ نے بھی اس یقین کا اظہار کیا ہے کہ شامی حکومت نے باغیوں کے خلاف کیمیائی ہتھیار استعمال کیے ہیں۔ برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کی طرف سے بھی جمعرات کے دن جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ شام میں ایسے مہلک ہتھیاروں کا استعمال کیا جا چکا ہے۔

درایں اثناء وائٹ ہاؤس اور دفتر خارجہ نے زور دیا ہے کہ شام میں مبینہ طور پر سرن گیس کے استعمال کے بارے میں مزید معلومات اکٹھی کی جائیں۔ وینٹرل نے بتایا ہے کہ متعلقہ ادارے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لاتے ہوئے مزید معلومات جمع کر رہے ہیں۔

وائٹ ہاؤس کے ایک اعلیٰ اہلکار نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر ایک غیر ملکی خبر رساں ادارے کو بتایا کہ دمشق حکومت کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ واشنگٹن شام کی صورتحال کا بغور جائزہ لے رہا ہے اور اگر وہ کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کے بارے میں کوئی منصوبہ بنائے گا تو اس کے بارے میں فوری طور پر پتا چلا لیا جائے گا۔