لیبیا میں قذافی کے ہم پیالہ افراد کے خلاف قانون منظور

سابق اہم حکومتی عہدیدار نئی انتظامیہ عہدوں کے لئے نااہل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کی پارلیمنٹ نے سابق حکومت کے ہم پیالہ اور ہم نوالہ شخصیات کو سیاسی طور پر تنہاء کرنے کی غرض متنازعہ قانون کی منظوری دے دی ہے۔ اس مقصد کے لئے لیبی نیشنل کانگریس کا اجلاس منعقد ہوا جس میں دو سو کے ایوان سے 168 ارکان نے شرکت کی۔ اجلاس میں سیاسی تنہائی سے متعلق قانون کے مسودے پر شق وار بحث کے بعد اس قانون کو اکثریتی ووٹوں سے منظور کر لیا گیا۔

اس قانون کی چار ارکان پارلیمنٹ نے مخالفت کی۔ ان کا کہنا تھا کہ متنازعہ قانون کو پارلیمنٹ سے باہر ہونے والے مظاہروں کے دباو میں آ کر منظور کیا جا رہا ہے، یہ قانونی سازی بندوق کے نوک پر کرائی گئی ہے اور اس کے دورس منفی اثرات سے پورا ملک متاثر ہو گا۔

منظوری کے ایک ماہ بعد نافذ العمل ہونے والے اس قانون کے بموجب لیبیا کے سابق مقتول صدر معمر القذافی کے 42 سالہ دور میں اعلی عہدوں پر کام کرنے والے نئی انتظامیہ میں کسی بھی ذمہ داری کے لئے نااہل ہوں گے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ حالیہ پیش رفت وزیر اعظم کو مستعفی ہونے پر مجبور کر سکتی ہے کیونکہ علی زیدان سن 1980ء میں کرنل قذافی سے علاحدگی سے پہلے ان کے اہم ملکوں میں سفیر رہ چکے ہیں۔ قانون میں اس امر کی وضاحت نہیں ملتی کہ آیا سابق وزیر اعظم کے موجود منصب سنبھالنے سے پہلے کی ذ٘مہ دارایاں انہیں اس کقان کی زد میں لانے کے لئے کافی ہیں؟

لیبیا میں قوم پرست حلقوں نے اتوار کے روز منظور ہونے والے قانون کا اصولی طور پر خیر مقدم کیا تھا کیونکہ اس پر چلتے ہوئے عوامی تحریک اپنے اہداف بہتر طور پر حاصل کر سکتی ہے۔

ادھر قانون کی منظوری کے حق میں مظاہرے کرنے والے گروپوں نے اپنی تحریک کو روکنے کا اعلان کیا ہے۔ اس سے قبل انہوں نے وزارت قانون اور خارجہ کا محاصرہ کر رکھا تھا اور قانون منظوری کے لئے دباو بڑھا رہے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں