.

ماسکو، دمشق کو جدید میزائل فروخت کرنا چاہتا ہے: وال سٹریٹ جرنل

عبوری سیاسی عمل بشار الاسد کی اقتدار سے علاحدگی سے مشروط ہے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے امریکا کو خبردار کیا ہے کہ روس کئی دنوں سے شام کو زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل فروخت کرنے کا ارادہ رکھتا ہے حالانکہ مغربی دنیا دباؤ ڈال رہی ہے کہ ماسکو ایسا کرنے سے باز رہے۔

'وال سٹریٹ جرنل' کے مطابق امریکی حکام اسرائیل کی تجزیاتی رپورٹس کا جائزہ لے رہے ہیں، تاہم انہوں نے ایس ۔ 300 طرز کی میزائل بیڑیاں جلد فروخت سے متعلق کسی قسم کا تبصرہ کرنے سے گریز کیا ہے۔

اخبار نے مزید بتایا کہ سودے میں چھے لانچنگ پیڈز اور دو سو کلومیٹر تک مار کرنے والے ایک سو چوالیس میزائل شامل ہیں۔ توقع ہے کہ اگلے تین مہینوں کے دوران پہلی کھیپ ارسال کر دی جائے گی۔

ادھرامریکی دفتر خارجہ کے بہ قول واشنگٹن شام میں سیاسی انتقال اقتدار کا عمل شروع کرنے کی غرض سے صدر بشار الاسد کے اقتدار علاحدگی کے مطالبے پر مصر ہے۔ وزارت داخلہ کی نائب ترجمان پیٹرک وینٹریل نے کہا کہ بشار الاسد کی اقتدار سے علاحدگی کے معاملے پر ان کے ملک کی پالیسی چنداں تبدیل نہیں ہوئی۔ وہ جتنی جلدی ممکن ہو اقتدار چھوڑ دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ شامی حکومت اور اپوزیشن پر لازم ہے کہ وہ عبوری حکومت تشکیل دینے کی خاطر مل بیٹھیں۔

وینٹریل کے مطابق امریکا، روس کے ملکر دونوں فریقوں کو مذاکرات کی جانب لانے میں اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔ ہم اس منصوبے کو روبعمل لانے کی کوششیں جاری رکھیں گے۔

شام حزب اختلاف کی جماعتوں کے نمائندہ نیشنل الائنس نے بھی اس موقف کا اظہار کیا تھا کہ بحران کا حل شامی صدر کے اقتدار چھوڑنے سے شروع ہو گا۔ اس امر کا اعلان انہوں نے بحران کے سیاسی حل کی خاطر روس اور امریکا کے مشترکہ اعلان کے بعد کیا ہے، تاہم یہ اتفاق جینوا معاہدے کے فریم ورک میں سامنے آیا ہے جس میں بشار الاسد کی بیدخلی کی شرط نہیں رکھی گئی تھی۔