یمن میں بین الاقوامی ریڈ کراس کے یرغمال تین ملازمین بازیاب

قبائلیوں نے تین روز تک زیر حراست رکھنے کے بعد رہا کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن میں قبائلیوں نے بین الاقوامی ریڈکراس کمیٹی (آئی سی آر سی) کے یرغمال بنائے گئے تین ملازمین کو رہا کردیا ہے۔

بین الاقوامی ریڈکراس کے تین ملازمین۔۔۔ایک سوئس،ایک کینیائی اور ایک یمنی شہری۔۔۔۔۔ کو گذشتہ سوموار کو جنوبی صوبہ ابین میں اغوا کر لیا گیا تھا۔یمن کے سکیورٹی ذرائع کے مطابق اغوا کار قبائلیوں نے ان تینوں کو بدھ کی رات رہا کردیا ہے اور ان کی صحت بہتر ہے۔

آئی سی آر سی نے اغوا کی واردات کے وقت ان ملازمین کی قومیت ظاہر نہیں کی تھی۔اس کا کہنا ہے کہ اس کے ملازمین رہائی پانے کے بعد باحفاظت جنوبی شہر عدن پہنچ گئے ہیں۔وہ صوبہ ابین میں آئی سی آر سی کی گاڑی پر اپنے کام سے واپس آرہے تھے۔دوران سفر راستے میں انھیں مسلح افراد نے اغوا کر لیا تھا۔

واضح رہے کہ غربت کا شکار یمن میں غیر ملکیوں کے اغوا کی وارداتیں وقفے وقفے سے ہوتی رہتی ہیں اور عام طور پر القاعدہ کے جنگجو یا قبائلی تاوان کے لیے غیرملکی سیاحوں یا عالمی اداروں کے غیرملکی ملازمین کو اغوا کرتے رہتے ہیں۔

اسی ماہ کے آغاز میں ایک فِنش جوڑے اور ایک آسٹروی طالب علم کی رہائی عمل میں آئی تھی۔ان تینوں کو القاعدہ کے جنگجوؤں نے چار ماہ قبل یرغمال بنا لیا تھا اور انھوں نے ان کو چھوڑنے کے لیے یمنی جیلوں میں قید اپنے ساتھیوں کی رہائی کے علاوہ تاوان کا مطالبہ کیا تھا۔تاہم یہ واضح نہیں ہوا تھا کہ ان کی رہائی تاوان کے بدلے میں عمل میں آئی تھی یا القاعدہ کے کچھ جنگجوؤں کو جیلوں سے رہا کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں