سعودی دوشیزہ نے دنیا کی بلند ترین ماؤنٹ ایورسٹ سر کر لی

رھا المحرق ایورسٹ سر کرنے والی کم عمر ترین سعودی شہری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی خاتون سے تعلق رکھنے والی پہلی خاتون نے دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایوارسٹ کو سر کر کے ایک نئی تاریخ رقم کی ہے۔ 25 سالہ رھا المحرق سعودی عرب کے ساتھ ساتھ عرب دنیا کی بھی کم عمر ترین کوہ پیما ہیں جہنوں نے ایوارسٹ کی بلندیوں کو چھوا ہے۔

نیپال کے کوہ پیمائی کے ادارے کے اہلکار تلک پانڈے نے کہا کہ 35 غیر ملکی باشنوں نے 29 نیپالی باشندوں کی مدد سے پہاڑ کے نیپالی حصے کی جانب سے رات کو چڑھنے کی کوشش کی اور ہفتے کی صبح 8 ہزار 850 میٹر بلند دنیا کی سب سے بڑی چوٹی کو سر کرنے کا اعزاز حاصل کر لیا۔

یہ کارنامہ انجام دینے والوں میں رها المحرق نامی سعودی خاتون بھی شامل ہیں جو ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والی پہلی سعودی خاتون بن گئی ہیں جبکہ اس کے ساتھ ساتھ پچیس سالہ دوشیزہ نے مہم سر کرنے والے سب سے کم عمر سعودی شہری کا اعزاز بھی حاصل کر لیا۔ جدہ سے تعلق رکھنے والی رها المحرق یونیورسٹی گریجویٹ ہیں اور آج کل دبئی میں مقیم ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اس گروپ میں ایک قطری اور فلسطینی شہری بھی شامل تھے اور انہوں نے اپنے ملک کو پہلی بار یہ اعزاز دلایا ہے۔

ایورسٹ کو نیپال یا تبت کی جانب سے سر کیا جا سکتا اور مئی میں شاندار موسم کے باعث یہ چوٹی سر کرنے کے لیے سب سے موزوں مہینہ تصور کیا جاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں